’’ ہمت ہے تو ہٹا کر دکھاؤ۔۔۔‘‘ عثمان بُزدار ڈٹ گئے، پنجاب کی وزارت اعلیٰ کے حوالے سے بڑا فیصلہ ہوگیا

2019 ,اپریل 30



لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک ) وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے کہا ہے کہ مجھ پر قائد اور ارکان کا اعتماد ہے ، مجھے ہٹایا نہیں جاسکتا، اپوزیشن شوق سے تحریک عدم اعتماد لیکر آئے، ہم دفاع کریں گے،جس دن سے آیا ہوں، اسی دن سے باتیں شروع ہوگئیں، وزیراعلیٰ کون ہے ؟ کسی نے کہا کہ وزیراعلیٰ آج جا رہا ہے، کسی نے کہا کل جا رہا ہے۔انہوں نے آج پنجاب اسمبلی کے احاطے میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ جس دن سے ہم آئے ہیں ،اسی دن سے باتیں شروع ہوگئیں، کسی نے کہا کہ وزیراعلیٰ کون ہے ؟کسی نے کہا وزیراعلیٰ آج جا رہا ہے، کسی نے کہا کہ کل جا رہا ہے۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ میں نے پہلے بھی کہا تھا کہ جب تک اللہ کا حکم ہے، میرے قائد کا مجھ پر اعتماد ہے، ارکان اسمبلی کا مجھ پر اعتماد ہے مجھے ہٹایا نہیں جاسکتا۔انہوں نے کہاکہ اپوزیشن شوق سے تحریک عدم اعتماد لیکر آئے، ہم دفاع کریں گے،انہوں نے ایک سوال پر کہا کہ اپوزیشن بل کے معاملے پر شوق سے عدالت جائے ہم مقابلہ کریں گے۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ آج پنجاب اسمبلی کیلئے بڑا اہمیت کا دن تھا، پنجاب اسمبلی نے آج بلدیاتی نظام کا بل منظور کرلیا ہے۔وزیراعظم نے نیا بلدیاتی نظام لانے کا وعدہ کیا تھا۔نئے بلدیاتی نظام سے پنجاب میں واضح تبدیلی نظر آئے گی۔سرکاری افسران کو پورے پنجاب میں ایڈمنسٹرزلگائیں گے۔22ہزار پنچائت کونسلز قائم کریں گے۔بلدیاتی انتخابات ہونے تک تمام معاملات ایڈمنسٹریٹر چلائے گا۔انہوں نے کہا کہ بلدیاتی نظام کے بل کیلئے ہمارے پاس کافی ووٹ تھے میری ضرورت نہیں تھی۔انہوں نے کہا کہ جنوبی پنجاب صوبے کے معاملے پر بجٹ کے بعد دیکھیں گے۔بجٹ کا 33فیصد حصہ براہ راست لوکل گورنمنٹ کو جائے گا۔سب سے اہم مسئلہ لوکل گورنمنٹ بل تھا، ہم نچلی سطح تک لوگوں کو بااختیار بنائیں گے، پچھلی حکومت میں توبلدیاتی نمائندوں کے پاس کوئی اختیار ہی نہیں تھا۔وزیراعلیٰ پنجاب نے کہا کہ میں سب سے پہلے آج اسمبلی میں آیا اور سب سے آخر میں جا رہا ہوں ، میں نے اپنے چیمبر میں بلدیاتی بل کی منظوری کے تمام عمل کو مانیٹر کیا۔ انہوں نے ایک سوال پر کہا کہ میرے ووٹ کی ضرورت نہیں تھی،بڑی تعداد میں ممبر موجود تھے۔اس لیے ایوان کے اندر نہیں گیا۔

متعلقہ خبریں