لال سوہانرا نیشنل پارک،بہاولپور

2018 ,اپریل 2



لال سوہانرا نیشنل پارک، صوبہ پنجاب کے ضلع بہاولپور میں 32کلومیٹر شمال میں واقع ہے اس کا رقبہ1 لاکھ 24ہزار 480ہیکٹرز پر مشتمل ہے اسے بلوسفیس  کہا جاتا ہے کیونکہ اس میں مقامی آبادی بھی ہیں صحرائی اور میدانی علاقے بھی ہیں۔ گھنے جنگل اور بنجر علاقے بھی۔ نہریں بھی ہے اور بے آب و گیاہ ویرانے بھی۔ اسے محفوظ علاقے کے ساتھ مقامی آبادی کے مربوط ہونے کے باعث بلوسفیس  کہا جاتا ہے۔


لال سوہانرا نیشنل پارک کو کالے ہرن کے تحفظ کے لیے قائم کیا گیا تھا جو اس علاقے سے ناپید ہوچکے تھے ورلڈ وائلڈ فنڈ فارنیچر ( سابقہ ورلڈ وائلڈ لائف فنڈ) کی اپیل کے جواب میں امریکہ سے جنگلی حیات کے حامیوں نے دس کا لے ہرنوں کو ان کے اصل مسکن چولستان کے صحرائی علاقے میں بھیجا۔


یہ حقیقت بھی دلچسپی کا باعث ہے کہ دوسری عالمی جنگ کے بعد امریکی فضائیہ کا ایک افسر بہاولپور سے سیاہ ہرنوں کا تحفہ امریکہ لے گیا تھا اور اب وہاں ان کی تعداد پچاس ہزار سے زائد ہوچکی ہے جبکہ پاکستان میں اندھا دھند شکار کے باعث اس کی نسل ختم ہوگئی ہے دراصل امریکہ سے کالے ہرنوں کا تحفہ امریکی فضائیہ کے افسر کو دیئے گئے تحفے کی واپسی تھی۔

ورلڈ وائڈ فنڈ کی ایک اور اپیل کے جواب میں ہالینڈ نے بچوں کو اپنا جیب خرچ چندے میں دے کر 12فٹ بلند اور 70کلومیٹر طویل تار کی جالیاں تحفے میں دیں تاکہ کالے ہرن کی قیمتی اور نایاب نسل کی مزید افزائش کے لیے لال سوہانرا نیشنل پارک میں حفاظتی جنگلے بنائے جا سکیں۔ چنانچہ اس عطیے سے 18کلومیٹر، 9کلومیٹر اور 8کلومیٹر کے رقبے کے چار بڑے انکلورژ بنائے گئے۔ ان محفوظ باڑوں میں کالے ہرن کی تعداد اپریل 1996ءمیں 325کے لگ بھگ تھی سیاہ ہرن کی افزائش نسل گھنے جنگل میںممکن نہ تھی اس طرح شکاری ان کو ہرگز نہ چھوڑتے۔ حالانکہ انکلورژ میں بھی وہ شکاریوں کی دست برد سے محفوظ نہیں ہیں لیکن اس طرح پھر بھی ان کی حفاظت اور دیکھ بھال نسبتاًآسان ہوگئی ہے۔


سیاہ ہرن کو ان وسیع و عریض انکلورژ میں چنکارا غزل اور نیل گائے کے ساتھ رکھا گیا ہے۔ اس پارک میں جنگلی حیات کی اقسام میں کالے ہرن کے علاوہ سہیہ، بھیڑیا، لومڑی، صحرائی لومڑی، گورپٹ، مشک بلاو¿، سرمئی نیولا، قراقال بلی، صحرائی بلی، جنگل سور، کلغی والا خار پشت، بڑے خرگوش، کالا تیتر، بھور ا تیتر، کونک، بڑا الو، چتی دار چھوٹا الو، کھچوے، چتی سانپ، سنگھاڑا اور کھگا مچھلی شامل ہیں۔


لال سوہانرا نیشنل پارک میں داخل ہوں تو ایک پختہ سڑک دور تک بل کھاتی چلی گئی ہے تھوڑے فاصلے پر بہاول نہرایک ہیڈ ریگو لیٹر کی مدد سے کئی شاخوں میں تقسیم ہوتی ہے جس کے بائیں جانب چلڈرن پارک ہے جہاں جھولوں اور سبزہ زار کے علاوہ مختلف حیوانوں کے جنگلے ہیں جن میں ہندوستان نسل کے گینڈے، چنکارا، مختلف پرندے، اور بندر وغیرہ رکھے گئے ہیں۔

متعلقہ خبریں