نواز شریف دھماکہ کرنے کیلئے تیار نہ تھے البتہ ایٹم بم کیلئے کس صدر سے مالی مدد لی گئی؟ تہلکہ انکشاف کر دیا

2019 ,مئی 29



لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) تجزیہ کار ہارون الرشید نے کہا ہے کہ کسی ایک شخص نے ایٹم بم نہیں بنایا ، کرنل قذافی نے اس پروگرام کیلئے ایک ارب ڈالر دیئے جبکہ ایک اورملک نے بھی پاکستان کی مدد کی۔ اگر ذوالفقار علی بھٹو اس کو شروع نہ کرتے تو یہ شروع نہ ہوتا جبکہ ضیاا لحق نے بھی بہت کردار ادا کیا اس کے زمانے میں ایٹم بم مکمل ہوا، ان کا نام بھی لیا جاناچاہئے ۔ غلام اسحاق خان نے جب سیکرٹری خزانہ اورصدر مملکت تھے انہوں نے بڑا کردار ادا کیا، سائنسدان اسے اپنے والد کی طرح سمجھتے تھے ۔پروگرام مقابل میں میزبان ثروت ولیم سے گفتگوکرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ نوازشریف کے دور میں ایٹمی دھماکہ کیا گیا لیکن وہ تیار نہیں تھے ۔ اس کا کریڈٹ ڈاکٹر ثمر مبارک مند کو بھی جاتاہے ۔ آج مریم نواز نے اپنی تقریر میں شہبازشریف کا بھی ذکر کیا لیکن انہوں نے وزیراعظم کے بارے میں اچھے الفاظ استعمال نہیں کئے ۔مجھے لگتاہے کہ فاٹا واقعہ پر عمران خان کو سوچ سمجھ کربات کرنی چاہئے ۔ میں نے تو پہلے ہی کہا تھاکہ مودی عمران خان کو نہیں بلائے گا اور اگربلایا گیا تو عمران خان نہیں جائیں گے ۔ انہوں نے کہاکہ فضیل اصغر شفقت محمود کے کزن ہیں جنہوں نے ایک گروپ بنارکھا تھا انہیں اب پنجاب سے بھیج دیا گیاہے ، جب تک مجھے شفقت محمو د کا پیغام نہیں آتا خبر مکمل نہیں ہوگی۔تجزیہ کار ظفر ہلالی نے کہا کہ ہم نے 1985میں ایٹمی بم تیار کرلیا تھا لیکن اس کا اعلان نہیں کیا گیا، اس وقت نوازشریف کہاں تھے نوازشریف چاہتے تھے کہ ایٹمی دھماکے نہ کریں لیکن ساتھیوں نے ایسا نہیں کرنے دیا۔معمر قذافی نے ذوالفقار علی بھٹو سے کہا تھاکہ ایٹم بم بناؤ تمہارے پاس پیسوں کی کمی نہیں ہوگی اس نے اس کیلئے مدد بھی دی۔ باہر سے عید کی ترسیلات زر آرہی ہیں اس لئے ڈالر کی قدر میں کمی ہوئی ۔ اگر معاملہ ٹھیک نہیں ہوا تو ڈالر 155 تک جائے گا۔مودی کوئی واجپائی نہیں وہ سمجھ دار شخص تھا اس مودی کو کچھ پتہ ہی نہیں ہے ۔

متعلقہ خبریں