کتاب کی اہمیت کو اجاگر کرنے کا انوکھا طریقہ

2019 ,فروری 7



لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک ) کتاب کی اہمیت سے کون انکاری ہے۔ دنیا کی ہر زبان، ہر مذہب، ہر مہذب معاشرہ ‘کتاب’ کو سب کچھ مانتا ہے۔ اسی اہمیت کو اجاگر کرنے کے لیے میکسیکو سے تعلق رکھنے والے ایک آرٹسٹ جارج مینڈیز بلیک نے ‘دی کیسل’ نامی ایک فن پارہ تخلیق کیا ہے۔ اس فن پارے کو تخلیق کرنے کے لیے آرٹ کی قسم انسٹالیشن کا سہارا لیا گیا ہے۔ اس قسم میں اصلی چیزوں کو استعمال کرتے ہوئے اپنا پیغام دیکھنے والوں تک پہنچایا جاتا ہے۔ جارج کا مقصد ایسے بیرونی عوامل کی طرف توجہ دلانا تھا جو کسی بھی بنیاد میں تبدیلی لا سکتے ہیں جیسے کہ کتاب۔ اس کے لیے آرٹسٹ نے 75×13 فٹ کی ایک دیوار اینٹوں سے چنی اور اس دیوار کی بنیاد میں اس نے جرمنی سے تعلق رکھنے والے مصنف فرانز کافکا کے ناول ‘دی کیسل’ کی ایک کاپی رکھ دی۔ فوٹو کریڈٹ؛ دس از کولوسل ڈاٹ کام دیوار کا وہ حصہ جہاں بنیاد میں کتاب موجود تھی وہ بقیہ دیوار کی طرح ہموار نا رہا بلکہ وہ حصہ ابھرا ہوا نظر آنے لگا، یہ ابھار تبدیلی یا فرق کی طرف اشارہ تھا۔ جارج نامی آرٹسٹ نے کافکا کے ناول کو دیوار کی بنیاد میں اس مصنف کی زندگی اور افکار کو خراج تحسین پیش کرنے کے لیے رکھا۔ اس کا بنیادی مقصد یہ بتانا بھی تھا کہ کیسے ایک خیال یادگار اور پراثر ثابت ہو سکتا ہے۔

متعلقہ خبریں