متنازعہ ویڈیو اسکینڈل ۔۔۔۔ نیب انتظامیہ اور ماتحت عملے نے اپنا فیصلہ سُنا دیا، جاوید اقبال دنگ رہ گئے

2019 ,مئی 29



راولپنڈی (مانیٹرنگ ڈیسک) نیب افسران و انتظامیہ نے چئیرمین نیب جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال کے ساتھ اظہارِ یکجہتی کیا ہے۔ افسران و انتظامیہ نے کہا ہے کہ ہم چئیرمین نیب کے خلاف بے بنیاد اور من گھڑت پروپیگنڈہ مسترد کرتے ہیں۔ نیب اہلکاروں کا کہنا ہے کہ ہم سب چئیرمین نیب کے ساتھ کھڑے ہیں،چئیرمین نیب کے دور میں محکمے کی کارکردگی مثالی رہی ہے، اور محکمے نے شاندار کام کیا ہے۔ذرائع کے مطابق موجودہ چئیرمین نیب نے نیب افسران اور اہلکاروں کی تنخواہوں اور الاؤنسز میں خاطرخواہ اضافہ کیا اور سہولیات فراہم کیں۔ انتظامیہ کا کہنا ہے کہ جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال نے سنیارٹی لسٹ کے مطابق اہلکاروں کو ترقیاں دیں اور حقدار ملازمین کو بھی تقیاں دیں۔نیب افسران و انتظامیہ کا کہنا ہے کہ چئیرمین نیب نے بدعنوانی کے خاتمے کو قومی فریضة قرار دیا اور احتساب سب کے لیے کی پالیسی اپنائی جس کی وجہ سے ملک سے بدعنوانی کا خاتمہ پوری قوم کا بیانیہ بن چکا ہے ۔انتظامیہ نے کہا ہے کہ چئیرمین نیب جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال ملک سے بدعنوانی کے خاتمے کے لیے کوشاں ہیں۔ دوسری جانب گیلپ سروے میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ ملک کے تقریباََ 59فیصد عوام نیب کر اعتما کرتے ہیں۔ یاد رہے کہ گزشتہ دنوں نیب چئیرمین کے منسوب کر کے ایک نجی چینل پر ایک وڈیو چلائی گئی تھی جس میں ان کی شخصیت کو متنازعہ بنانے کی کوشش کی گئی تھی اور اس پر ان کے خلاف شدید تنقید بھی کی گئی تھی تاہم بعد میں چینل نے معذرت کر لی تھی اور بیان جاری کیا تھا کہ وہ ویڈیو جعلی تھی اور چئیرمین نیب کا اس ویڈیو سے کوئی تعلق نہیں ہے۔چئیرمین نیب بھی اس ویڈیو کے جھوٹے ہونے کا کہہ چکے ہیں جبکہ حکومتی جماعت تحریکِ انصاف نے بھی چئیرمین نیب کی حمایت کی ہے اور پیمرا نے چینل کے خلاف ایکشن لیا ہے۔ دوسری سیاسی جماعتوں نے بھی اسے چئیرمین کا ذاتی معاملہ قرار دیا ہے تاہم مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی نے معاملے کی تحقیقات کے لیے پارلیمانی کمیٹی بنائے جانے کا مطالبہ کیا ہے۔

متعلقہ خبریں