امریکہ کی کشمیر میں مداخلت کے بعد بھارت بوکھلا ہٹ میں کیا شرمناک حرکت کرنے جا رہا ہے؟ پوری دنیا کو ہلا کر رکھ دینے والا انکشاف

2019 ,اگست 3



اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک ) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ لگتا ہے بھارت بوکھلاہٹ کا شکار ہے۔مقبوضہ کشمیرکے حالات بھارت کے ہاتھ سے نکل چکے ہیں۔دنیا پاکستان کی مقبولیت اور امن کی خواہش دیکھ رہی ہے۔امریکی صدر بھی مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے ثاثلی کا کردار ادا اکرنے کو تیار ہیں۔بھارت اب مذاکرات کے لیے تیار نہیں ہے۔ شاہ محمود قریشی نے مزہد کہا کہ بھارت نےمعصوم شہریوں پرکلسٹر ایمونیشن کا استعمال شروع کردیاہے۔ اقوام متحدہ کو بھارت کی جانب سے سیز فائر کے معاہدے کی خلاف ورزی سے متعلق خط بھی لکھا ہے۔اقوام متحدہ کی ذمہ داری ہے کہ مسئلہ کشمیر کو حل کرانے میں کردار اد ا کرے۔واضح رہے کہ ڈی جیآئی ایس پی آر نے کہا کہ بھارت کی جانب سے لائن آف کنٹرول پر شہریوں کو نشانہ بنانے کے لیے کلسٹر ٹوائے بم کے استعمال کا انکشاف ہوا ۔
ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور کا کہنا ہے کہ بھارتی فوج کی جانب سے جنیوا کنونشن اور بین الاقوامی انسانی قوانین کی سنگین خلاف ورزی ہو رہی ہے۔ بھارتی فوج کنٹرول لائن پر شہری آبادی پر کلسٹر بم استعمال کررہی ہے۔ بھارتی فوج کی جانب سے استعمال کیے جانے والے کلسٹر بموں سے 4 سال کے بچے سمیت دو افراد شہید اور 11 شدید زخمی ہوئے ۔ ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ بھارتی فوج جان بوجھ کر شہری آبادی کو کلسٹر ایمونیشن سے نشانہ بنا رہی ہے۔بھارتی فوج نے 30 اور 31 جولائی کی رات نیلم ویلی پر کلسٹر ایمونیشن کا استعمال کیا۔ بھارتی فوج کنٹرول لائن پر شہری آبادی پر کلسٹر ایمونیشن استعمال کررہی ہے۔ بچوں اور خواتین پر آرٹلری کے ذریعے کلسٹر بم پھینکا گیا۔ حالانکہ کلسٹرایمونیشن معاہدے کے تحت غیرمسلح افراد کے خلاف کلسٹربموں کا استعمال ممنوع ہے۔ کلسٹر کنونشن کے تحت کلسٹر ایمونیشن کا استعمال ممنوع ہے۔کلسٹر ایمونیشن کا استعمال بھارتی جنگی جنون کا غماز ہے ۔ ترجمان پاک فوج کے مطابق رواں سالبھارت نے اب تک 1824 بار جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی کی جس کے نتیجے میں اب تک 16 افراد شہید، 105 زخمی ہوئے۔ ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور کا کہنا تھا کہ کلسٹر بموں کے استعمال نےبھارتی فوج کا چہرہ دنیا کے سامنے بے نقاب کر دیا ہے۔ عالمی برادری کو چاہئیے کہ وہ بھارت کی جانب سے کی جانے والی ان خلاف ورزیوں کا نوٹس لے۔ خیال رہے کہ پاکستان کی جانب سے بارہا امن مذاکرات کی پیشکش کے باوجود بھارتی فوج کی جانب سے لائن آف کنٹرول پر سیز فائر معاہدے کی خلاف ورزی ہے جو بھارت کی ہٹ دھرمی اور امن مذاکرات میں عدم دلچسپی کا واضح ثبوت ہے۔

متعلقہ خبریں