’’ مجھے اپنی نسلوں کو محفوظ بنانا ہے ‘‘ کھانے پینے کی اشیاء میں ملاوٹ کرنے والوں کی شامت آگئی ، وزیر اعظم نے دبنگ حکم جاری کر دیا

2019 ,مارچ 9



لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) وزیراعظم کی صدارت میں کلین اینڈ گرین پاکستان مہم، خوراک میں ملاوٹ کے خلاف اقدامات اور سیاحت کے فروغ کے حوالے سے الگ الگ جائزہ اجلاس ہوئے ہیں، وزیراعظم نے یہ بھی ہدایت کی ہے کہ شہریوں کی صحت سے کھیلنے والوں کے خلاف سخت کاروائی کی جائے  وزیراعظم کی صدارت میں کلین اینڈ گرین پاکستان مہم، خوراک میں ملاوٹ کے خلاف اقدامات اور سیاحت کے فروغ کے حوالے سے االگ الگ جائزہ اجلاس ہوئے۔ صوبہ پنجاب میں کلین اینڈ گرین پاکستان مہم کی تفصیلات سے آگاہ کرتے ہوئے بتایا گیا کہ ابھی تک تقریبا 111254 ایکڑ اراضی کو غیر قانونی قبضہ سے واگزار کرا لیا گیا ہے، وزیر اعظم کو بریفنگ میں بتایاگیا کہ سالڈ ویسٹ مینجمنٹ کمپنیز میں عملہ کی کارکردگی کی مسلسل مانیٹرنگ، اور پیشہ وارانہ لوگوں کی خدمات حاصل کی گئی ہیں۔ وزیر اعظم نے کہا کہ ہمارے پاس افرادی قوت کی کمی نہیں ہے، ضرورت اس امر کی ہے کہ محنت کرنے والے دیانت دار لوگوں کی حوصلہ افزا کی جائے اور کام نہ کرنے والوں کے خلاف ایکشن لیا جائے ، وزیراعظم کو آگاہ کیا گیا کہ صوبے بھر میں 174.50 ملین روپے گھوسٹ ایمپلائیزکے ضمن میں ریکور کیے گئے ہیں۔ 18 مارچ 2019 کو سینیٹیشن ویک کا انعقاد کیا جا رہا ہے جس کا افتتاح وزیر اعلی پنجاب کریں گے۔ پائلٹ رورل سینیٹیشن پروگرام کا بھی اپریل 2019 کے آخری ہفتے میں آغاز کیا جا رہا ہے جو 107 یونین کونسلز کے 1000 دیہاتوں میں شروع کی جائے گی۔پلانٹ فار پنجاب مہم کا آغاز اکیس مارچ کو وزیر اعلی پنجاب اور مشیر برائے موسمیاتی تبدیلی کریں گے جس کے تحت دس لاکھ پودے لگائے جائیں گے۔ وفاقی حکومت کی موسم بہار کی شجرکاری مہم کے دوران صوبہ پنجاب میں 47فیصد ٹارگٹس حاصل کر لیے گئے ہیں جبکہ اب تک2000 ایکڑجنگلات کی زمین کو غیر قانونی قبضے سے واگزار کروا لیا گیا ہے۔

ہوا اور پانی کی آلودگی کے حوالے سے کیے جانے والے اقدامات خصوصا اینٹوں کے بٹھوں کے حوالے سے اقدامات پر بریفنگ دی گئی ، وزیر اعظم نے کہا کہ عوام میں ماحولیاتی آلودگی کے حوالے سے آگاہی اجاگر کرنے کی اشد ضرورت ہے،دنیا بھر میں یہ ثابت ہو چکا ہے کہ ماحولیاتی آلودگی کا لیول بڑھتا ہے تو لوگوں کی زندگی کے سال کم ہونا شروع ہو جاتے ہیں،ہمیں اپنی موجودہ اور آنے والی نسلوں کا مستقبل محفوظ بنانا ہے۔وزیرِ اعظم کی زیر صدارت اجلاس میں صوبہ پنجاب میں خوراک میں ملاوٹ کے خلاف پنجاب فوڈ اتھارٹی کی جانب سے کیے جانے والے اقدامات پر تفصیلی بریفنگ بھی دی گئی اور کھانے پینے کی اشیا میں ملاوٹ ،خصوصا دودھ میں ملاوٹ ، کی حوصلہ شکنی کے حوالے سے کیے جانے والے اقدامات سے آگاہ کیا گیا ۔ڈائریکٹر جنرل پنجاب فوڈ اتھارٹی نے وزیرِ اعظم کو بریفنگ دیتے ہوئے عوام کو ملاوٹ سے پاک اشیا خورد و نوش کی فراہمی کے لیے کیے گئے اقدامات کے بارے میں آگاہ کیا۔وزیر اعظم نے ہدایت کی کہ ملاوٹ شدہ اشیا کے استعمال کے خلاف بھر پور آگاہی کی مہم شرو ع کی جائے اور دودھ کی معیاری سپلائی کے لئے جا مع منصوبہ بنایا جائے اور اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ دودھ میں مضر صحت کیمکل ملانے والو ں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے ، وزیراعظم عمران خان کو پناہ گاہوں کے قیام کے حوالے سے پیشرفت اور آئندہ مہینوں میں صوبے بھر میں مزید پناہ گاہوں کے قیام کے حوالے سے لائحہ عمل پر بریفنگ بھی بریفنگ دی گئی۔ کمشنر لاہورنے بتایا کہ لاہور میں اس وقت پانچ پناہ گاہوں کے قیام پر کام جاری ہے جن میں سے تین اپریل کے مہینے میں جبکہ 2 مئی میں پایہ تکمیل کو پہنچ جائیں گی،ان پناہ گاہوں کی نگرانی مخیر حضرات پر مشتمل گورننگ بورڈ کرے گا اور حکومت اس ضمن میں

facilitator

اور

supporter

کا کردار ادا کرے گی ، اس ضمن میں قانونی پہلوں کے حوالے سے لائحہ عمل پر بھی بریفنگ دی گئی جبکہ مخیر حضرات کی اجلاس میں ہسپتالوں سے ملحقہ مریضوں کے لواحقین کے لیے قیام و طعام اور اس ضمن میں تعاون کی تجویز پر غورکیا گیا ، وزیر اعظم نے صوبے بھر میں پناہ گاہوں کے قیام میں مخیر حضرات کی رضاکارانہ دلچسپی اور عملی خدمات کی حوصلہ افزاء اور مکمل حکومتی تعاون کا اعادہ کیا۔ وزیر اعظم نے ہدایت کی کہ زیادہ سے زیادہ ضرورت مند اور بے گھر افراد کے لیے پناہ گاہوں میں گنجائش میں اضافہ کیا جائے اور اس ضمن میں توسیع کے حوالے سے ہر ممکن اقدامات اٹھائے ، وزیر اعظم عمران خان کو صوبہ پنجاب میں سیاحت کے فروغ کے حوالے سے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ صوبہ پنجاب کی پہلی سیاحت پالیسی کا مسودہ کابینہ میں پیش کیے جانے کے لیے تیار ہے،صوبے بھر میں آٹھ نئے سیاحتی مقامات کی نشاندہی کی جا چکی ہے، سرکاری گیسٹ ہاؤسز کو تبدیل کرنے اور انکوسیاحوں کے لئے رہائشگاہ بنانے کے حوالے اقدامات میں پیش رفت ہوئی ہے،محکمہ جنگلات اور آبپاشی کے ستر (70) ریسٹ ہاوسز کو عوام کے لیے کھولا جا رہا ہے، ثقافتی، تاریخی ،مذہبی اور یوتھ ایڈونچر ٹورازم، آن لائن بکنگ اور سوشل میڈیا پورٹل کے حوالے نئے اقدامات پر بھی بریفنگ دی گئی ، جبکہ کوٹلی ستیاں، چکوال، کوہ سلیمان، اٹک، کالا باغ، خوشاب، بہاولپور اور جہلم میں نئے سیاحتی مقامات کے حوالے سے بریفنگ دی گئی ۔ وزیراعظم عمران خان نے مذہبی اور ثقافتی سیاحت ، خصوصا کرتارپور راہداری کے تناظر میں، ٹورازم کے پوٹینشل اور اہمیت کو اجاگر کیا اور اس ضمن میں خصوصی اقدامات کی ہدایت کی۔ وزیر اعظم نے ماحولیاتی تحفظ کے لیے اقدامات اور انفراسٹرکچر کی تعمیر کے حوالے سے اقدامات لینے کی بھی ہدایت کی ، وزیر اعظم نے نیشنل پارکس کے تحفظ، ایکو ٹورازم کی اہمیت، جنگلات اور نیشنل پارکس میں قبضہ مافیا کے خلاف ایکشن کے حوالے سے بھی ہدایات دیں۔ عمران خان نے کہا کہ ماحولیاتی تبدیلی ایک حقیقت ہے،ہمیں نیشنل پارکس بنانے پر خصوصی توجہ کی ضرورت ہے،ملک میں سیاحت فروغ پا رہی ہے ،غیر ملکی سیاحوں کی پاکستان میں سیاحت کے حوالے سے دلچسپی بڑھتی جا رہی ہے،سیاحت کے فروغ سے مقامی لوگوں کو روزگار میسر ہو گا، سرمایہ کاری میں اضافہ ہوگا، دور افتادہ علاقے ترقی کریں گے۔ وزیر اعظم نے تاریخی ورثے اور مقامات کی تزئین اور دیکھ بھال کے حوالے سے بھی خصوصی ہدایات دیں۔ وزیر اعظم کو صوبہ پنجاب میں سیاحت کے حوالے سے نئے اقدامات اور روڈ میپ کے حوالے سے بھی بریف کیا گیا جن میں ڈیزرٹ سفاری اور چکوال فور بائی فور ریلی شامل ہیں۔ وزیراعظم نے تاریخی و ثقافتی مقامات کی تزئین و آرائش کے حوالے سے وسائل کی دستیابی کے حوالے سے اقدامات کے لیے بھی مختلف ہدایات جاری کیں۔

متعلقہ خبریں