وقت واقعی بدل جاتا ہے : ایک رات جیل میں میاں صاحب اونچی اونچی کیا آوازلگاتے رہے؟ آس پاس موجود لوگوں نے سنتے ہی کیا کیا؟ تہلکہ خیز انکشاف

2019 ,فروری 7



لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) مسلم لیگ ن کی مرکزی رہنما مریم نواز کا کہنا ہے کہ ایک رات جیل میں میاں صاحب کو سینے میں تکلیف ہوئی، وہ آوازیں دیتے رہے مگر کوئی نہ آیا، میرے والد کی صحت سے کھلواڑ کیا گیا، یا اس کو سیاست کی نظر کیا گیا، یا ان کو خدا نخواستہ کوئی نقصان پہنچا تو اس کی ذمہ داری حکومت پر ہو گی۔ نواز شریف کی کوٹ لکھپت جیل منتقلی کے بعد مریم نواز نے ٹوئٹر پر حکومت کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا ۔ انہوں نے کہا ایک کے بعد دوسرا بورڈ اور ایک اسپتال کے بعد دوسرا اسپتال۔ پہلے پی آئی سی پھر جیل، پھر سروسز اسپتال جہاں امراض قلب کا شعبہ ہے ہی نہیں۔ اب پھر پی آئی سی لے جانے کی کوشش کی گئی لیکن میاں صاحب نے انکار کر دیا اور کہا کہ میں نہ خانہ بدوش ہوں نہ تضحیک کا نشانہ بننے کو تیار ہوں، مجھے واپس جیل لے جایا جائے۔ مریم نواز نے کہا کہ بہت بڑی آزمائش آئی مگر توکل اللہ پر رکھا، حکومت سے نہ کبھی علاج کی درخواست کی اور نہ کریں گے۔ میری مرحوم والدہ جب بسترِمرگ پر تھیں، ان خوفِ خدا سے عاری انسانوں نے جو اب حکومت میں ہیں ان کی بیماری کا مذاق اڑایا تھا۔ ظلم کی رات چھوٹی مگر اس کی پکڑ بہت بڑی ہے۔ انہوں نے مزید کہاایک رات جیل میں میاں صاحب کو سینے میں تکلیف ہوئی، وہ آوازیں دیتے رہے مگر کوئی نہ آیا۔ اس بے حسی اور سیاسی انتقام کا جواب حکمرانوں کو دینا پڑے کا۔ میں نے چپ رہ کر سب کچھ سہا اور مانگا تو صرف اللہ سے، کسی چیز پر سیاست نہیں کی، مگر اب اگر میرے والد کی صحت سے کھلواڑ کیا گیا، یا اس کو سیاست کی نظر کیا گیا، یا ان کو خدا نخواستہ کوئی نقصان پہنچا تو اس کی ذمہ داری حکومت پر ہو گی۔

 

متعلقہ خبریں