اپوزیشن کا یوم سیاہ، ن لیگی کارکنوں کو چیئرنگ کراس پہنچنے میں مشکلات، پولیس نے سٹیج ہٹادیا

2019 ,جولائی 25



لاہور (مانیٹرنگ رپورٹ) پنجاب اسمبلی کے سامنے مال روڈ پر اپوزیشن کے یوم سیاہ کے سلسلے میں ن لیگ کے کارکنوں کی بڑی تعداد جمع ہے تاہم پولیس کی جانب سے مرکزی قائدین کے پہنچنے سے پہلے ہی سٹیج ہٹادیا گیا ہے۔پولیس کا کہنا ہے کہ مال روڈ پر احتجاج اور جلسوں کی اجازت نہیں ہے جس کے باعث ن لیگ کو جلسہ نہیں کرنے دیا جائے گا۔  ن لیگ سمیت اپوزیشن جماعتوں کے کارکن بڑی تعداد میں مال روڈ چیئر نگ کراس پر جمع ہیں اور اپنے قائد ین کی آمد کا انتظار کررہے ہیں ۔ اس موقع پر کارکنوں کی جانب سے جو سٹیج لگایا تھا ، وہ ہٹا دیاگیا ہے جس کے باعث قائد ین کے خطاب کرنے کی صورت میں دشوار ی کاسامنا کرنا پڑسکتاہے ۔

    خیال رہے کہ 25 جولائی کو عام انتخابات کا ایک سال مکمل ہونے پر اپوزیشن جماعتوں کی جانب سے اسے یوم سیاہ کے طور پر منانے کا اعلان کیا گیا ہے۔ اپوزیشن جماعتوں کی جانب سے لاہور سمیت پشاور، کوئٹہ اور کراچی میں بھی احتجاجی جلسے کیے جارہے ہیں تاہم لاہور میں ن لیگ کے زیر اہتمام ہونے والے جلسہ پولیس کی جانب سے کارکنوں کو روکنے اور چیئرنگ کراس پر اکٹھے نہ ہونے دینے کے باعث مشکل ہوگیا ہے۔

    ن لیگ کے  رہنماﺅں کا کہناہے کہ انتظامیہ کی طرف سے چیئرنگ کراس جلسے میں پہنچنے والے کارکنوں کو ٹھوکر نیا زبیگ اور شاہدر ہ  پر روک دیا گیا ہے جس کی وجہ سے بہت سے کارکن مال روڈ پر نہیں پہنچ سکے ۔ مسلم لیگ ن کے صدر شہبازشریف ریلی کے ساتھ فیروز پور روڈ کے ذریعے رائیونڈ سے چیئرنگ کراس پہنچیں گے جہاں ان کا خطاب کچھ دیر بعد متوقع ہے ۔ پولیس کی جانب سے سٹیج ہٹائے جانے کے باعث امکان ظاہر کیا جارہا ہے کہ شہباز شریف کنٹینر پر چڑھ کر کارکنوں سے خطاب کریں گے۔

    مال روڈ پر پر پولیس اور مسلم لیگ ن کے کارکن آمنے سامنے آگئے ہیں، پولیس کی جانب سے مال روڈ پر رکاوٹیں کھڑی کی جارہی ہیں اور کارکنوں کو آگے بڑھنے سے روکا جارہاہے ۔ ن لیگ کے رہنماﺅں کی جانب سے کارکنوں کومسلسل آگے بڑھنے پر اکسایا جارہا ہے ۔ الحمراہ چوک میں لیگی کارکنوں نے پولیس پر حملہ کیا اور رکاوٹیں اٹھا کرپھینک دیں ۔پولیس کا کہنا ہے کہ ان کو انتظامیہ کی جانب سے احکامات ملے ہیں کہ مال پر روڈ پر جلسہ کرنے کی اجازت نہیں ہے جبکہ عدالت کی جانب سے بھی مال روڈ کو بند نہ کرنے کے احکامات ہیں۔

    متعلقہ خبریں