’’بھارت کے امیر ترین شخص مکیش امبانی نہیں بلکہ یہ شخصیت ہے ‘‘یہ شخصیت کون ہے؟ ایسی خبر آ گئی کہ سن کر آپ کے پیروں تلے بھی زمین نکل جائے گی

2018 ,دسمبر 17



ممبئی (مانیٹرنگ ڈیسک)حال ہی میں مکیش امبانی نے اپنی بیٹی ک شادی میں 10 کروڑ ڈالر خرچ کر دیئے ہیں جس کے بعد یہ تاثر پایا جارہاہے کہ وہ بھارت کے امیر ترین شخص ہیں اور ان کے کل اثاثے 40 ارب ڈالر ہیں۔ مکیش امبانی دراصل ریلائنس گروپ کے مالک ہیں جبکہ بل گیٹس بیس سال تک دنیا کے امیر ترین شخص رہے ہیں تاہم آپ کو یہ یہ بات جان کر شدید ترین حیرت ہو گی کہ بھاتت کی معروف کمپنی اور برانڈ ’’ٹاٹا‘‘ کے مالک رتن ٹاٹا نہ صرف بھارت بلکہ دنیا کے امیر ترین شخص ہیں تاہم دنیا کی امیر ترین افراد کی فہرست میں نہ ہونے کی اصل وجہ یہ ہے کہ ٹاٹا گروپ کے 65 فیصد اداروں کے مالک دراصل خیراتی ادارے ہیں اور ان کے اپنے اثاثے ایک سو ارب روپے سے بھی کم ہیں جو کہ مکیش امبانی کے مقابلے میں بہت زیادہ کم ہیں۔ کاروبار خیراتی اداروں کے ذریعے ہونے کی وجہ سے یہ رتن ٹاٹا کے اثاثوں میں ظاہر نہیں کیا جاتا اور رتن ٹاٹا کبھی بھی ارب پتی افراد کی فہرست میں جگہ نہیں بنا پاتے۔ چونکہ رتن ٹاٹا کے منافع کا بیشتر حصہ خیراتی اداروں میں چلا جاتا ہے اس لیے ان کے ہاتھ صرف نیک نامی آتی ہے۔ ٹاٹا گروپ کے خیراتی کام صرف انڈیا ہی نہیں بلکہ دنیا بھر میں پھیلے ہوئے ہیں جس کی ایک مثال ہارورڈ بزنس سکول کو دیے گئے 2 اعشاریہ 20 ارب ڈالرز ہیں۔رتن ٹاٹا بھارت کے سب سے بڑے صنعتکار گروپ ٹاٹا سنز اور ٹاٹا گروپ کے سربراہ ہیں۔ ٹاٹا گروپ کی بنیاد 1868یں رکھی گئی تھی اور اب یہ گروپ 96 سے زیادہ کاروبار چلا رہا ہے ۔ یہ گروپ چائے کی پتی سے نینو کار اور رینج روورز تک بنا رہا ہے۔ اس گروپ کی اہم پراڈکٹس میں ٹاٹا موٹرز، ٹاٹا سٹیل، ٹائٹن، ٹاٹا پاور، بیوریجز، کیمیکلز ، کمیونیکیشنر ، تاج ہوٹلز وغیرہ شامل ہیں۔80 سالہ رتن ٹاٹا اتنے بڑے گروپ کے سربراہ ہونے کے باوجود آج تک ارب پتی افراد کی فہرست میں شامل نہیں ہوسکے بلکہ ان کے ذاتی اثاثوں کی مالیت ایک ارب ڈالر سے بھی کم ہے۔ ایک بار ایک صحافی نے ان سے سوال پوچھا تھا کہ مکیش امبانی کے اثاثے اتنے زیادہ اور آپ ارب پتی افراد میں بھی شامل نہیں ہیں۔ اس سوال کے جواب میں رتن ٹاٹا نے کہا تھا کہ مکیش امبانی بیوپاری ہے جبکہ ہم صنعتکار ہیں۔ فوربز کی 2008 کی ارب پتی افراد کی فہرست کا جائزہ لیا جائے تو اس سال وارن بفٹ دنیا کے امیر ترین شخص قرار پائے تھے جن کے اثاثوں کی مالیت 62 ارب ڈالر تھی ۔ اگر 2008 میں ٹاٹا سنز کی وہ 65 فیصد اونر شپ جو خیراتی اداروں کے پاس تھی اس کو رتن ٹاٹا کے نام پر منتقل کردیا جاتا تو ان کے اثاثوں کی مالیت 70 ارب ڈالر سے زائد ہوجاتی

متعلقہ خبریں