وزیراعظم عمران خان نے صبح سویرے سعودی ولی عہد کے دورہ پاکستان پر ایسا پیغام جاری کر دیا کہ جس نے عوام کے دل جیت لیے

2019 ,فروری 18



اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک): وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ ولی عہدمحمدبن سلمان نے پاکستانیوں کے دل جیت لئے ہیں۔وزیراعظم عمران خان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ ولی عہدمحمدبن سلمان نے پاکستانیوں کے دل جیت لئے ہیں ۔سعودی ولی عہد نے خودکوپاکستان کا سفیرکہا۔وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ عشائیہ تقریب میں سعودی عرب میں موجودپاکستانیوں کے مسائل کاذکرکیا،اس پر محمدبن سلمان نے کہامجھے سعودی عرب میں پاکستان کاسفیرسمجھیں۔ واضح رہے کہ گزشتہ روز سعودی ولی عہد محمد بن سلمان 2 روزہ دورے پرپاکستان تشریف لائے ،نور خان ایئر بیس پر معزز مہمان کا پرتپاک استقبال کیا گیا، اس موقع پر وزیراعظم عمران خان ،آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ اور وفاقی کابینہ کے ارکان موجود تھے۔واضھ رہے کہ سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان آج اسلام آباد میں مصروف دن گزاریں گے۔مقامی میڈیا کے مطابق وزیراعظم ہاؤس میں عمران خان کے ساتھ ناشتے کے بعد سعودی مہمان صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی ،چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی اور اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر سے ملاقات کریں گے۔سعودی ولی عہد کی آج پاکستان کی بری فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ سے ملاقات بھی متوقع ہے۔ایوان صدر میں سعودی ولی عہد کے اعزاز میں آج ظہرانہ دیا جائے گا جب کہ شہزادہ محمد بن سلمان کو پاکستان کا اعلیٰ ترین سول ایوارڈ بھی دیا جائے گا۔سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان دو ررزہ دورے پر پاکستان میں موجود ہیں۔ جس کے دوران وہ آٹھ معاہدوں اور مفاہمت کی یادداشتوں (ایم او یوز) پر دستخط کریں گے جن میں اہم ترین بلوچستان کے صنعتی شہر گوادر میں آئل ریفائنری کا قیام ہے جو کہ آٹھ بلین ڈالر کا منصوبہ ہے۔نامہ نگار سحر بلوچ کے مطابق سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے کہا ہے کہ پاکستان کی معیشت کا مستقبل روشن ہے۔

پچھلے برس بھی پاکستان نے پانچ فیصد شرح کے ساتھ ترقی کی اور اس قیادت کی موجودگی میں پاکستان کا مستقبل انتہائی تابناک ہے۔انھوں کہا کہ 20 ارب ڈالر کے معاہدے پاکستان میں سعودی عرب کی سرمایہ کاری کا پہلا مرحلہ ہے۔عمران خان اور محمد بن سلمان کی ’ون آن ون‘ ملاقاتوزیراعظم عمران خان سے سعودی ولی عہد محمد بن سلمان نے ون آن ون ملاقات کی۔ وزیراعظم اور سعودی ولی عہد کی ملاقات وزیراعظم ہاؤس اسلام آباد میں ہوئی جس میں پاک سعودی تعلقات اور باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔وزیر اعظم نے کہا کہ 25 لاکھ پاکستانی سعودی عرب میں کام کرتے ہیں۔ یہ لوگ اپنے خاندانوں کو چھوڑ کر وہاں محنت مزدوری کے لیے جاتے ہیں اور ایک عرصے تک گھروں سے دور رہتے ہیں۔وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ یہ مزدور قانون پسند لوگ ہیں لیکن کچھ عرصے سے انھیں مشکلات کا سامنا ہے اور ان کی ولی عہد محمد بن سلمان سے درخواست ہے کہ وہ اس مسئلے کو اپنی سطح پر دیکھیں۔وزیر اعظم عمران خان نے کہا لاکھوں پاکستانی ہر سال فریضہ حج کے لیے سعودی عرب جاتے ہیں لیکن انھیں وہاں امیگریشن کے کچھ مسائل کا سامنا ہے۔ وزیر اعظم نے سعودی ولی عہد سے درخواست کی کہ عمر رسیدہ حاجیوں کی امیگریشن کا بندوبست پاکستان کے کچھ شہروں میں کیا جائے جس سے ’اللہ تعالی ان سے بہت خوش ہو گا۔‘وزیر اعظم پاکستان نے سعودی ولی عہد کی توجہ سعودی جیلوں میں قید پاکستانیوں کی طرف بھی دلوائی۔ وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ تین ہزار پاکستانی سعودی عرب کی جیلوں میں ہیں اگر وہ ان کے لیے کچھ کر سکیں۔اس پر سعودی ولی عہد نے کہا کہ مجھ سے جو ہو سکا میں ان لوگوں کے لیے کروں گا۔ انھوں نے کہا کہ آپ مجھے سعودی عرب میں پاکستان کا سفیر سمجھیں۔‘وزیرِ اعظم عمران خان اور سعودی ولی عہد کے درمیان بات چیت کے دوران سعودی عرب اور پاکستان میں سپریم کوآرڈینیشن کونسل کے کردار پر بھی بات کی گئی۔ یہ کونسل باہمی مفاہمت کے پراجیکٹ اور ان کے تکمیل کے مراحل اور اس میں پیش آنے والے مسائل کا جائزہ لے گی۔بعد ازاں سپریم کوآرڈینیشن کونسل کا افتتاحی اجلاس ہوا جس کی صدارت محمد بن سلمان اور وزیراعظم عمران خان نے کی۔ اعلیٰ سطح کونسل کے قیام کی تجویز سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے دی تھی جس میں دونوں ممالک کے خارجہ امور، دفاع اوردفاعی پیداوارکے وزرا شامل تھے۔وزیرِاعظم ہاؤس میں سعودی اور پاکستانی حکام نے معدنیات، سعودی سٹینڈرڈز اینڈ کوالٹی کنٹرول اتھارٹی میں تکنیکی تعاون، میٹرولوجی، کھیل، پیٹروکیمیکل سیکٹراور بجلی کی پیداوار کے شعبوں میں یادداشتوں پر دستخط بھی کیے۔

متعلقہ خبریں