بینظیر بھٹو کا قتل ۔۔۔۔ شاہد خان آفریدی نے زروالوں کی چیخیں نکلوا دینے والا انکشاف کر دیا

2019 ,مئی 5



لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) سابق کپتان شاہد آفریدی کی کتاب ’’گیم چینجر‘‘ کی تقریب رونمائی کر دی گئی، تقریب رونمائی سے خطاب کرتے ہوئے شاہد آفریدی نے کہا کہ عمران خان کو بطور وزیر اعظم ابھی ٹائم دینا چاہیے ،عوام کوعمران خان سے بہت امیدیں ہیں، میری کتاب میں تاریخ پیدائش درست پرنٹ نہیں ہوئی، درست تاریخ پیدائش 1977 ہی ہے ، وقاریونس سمیت تمام سینئرز کا احترام کرتا ہوں، کتاب میں صرف اختلافات کا ذکر نہیں کیا بلکہ تعریف بھی کی ہے ، ورلڈ کپ کیلئے پاکستان کی ٹیم بہت متوازن ہے ،امید ہے پاکستان اچھی کارکردگی دکھائے گا۔ شاہد آفریدی اپنی کتاب’’گیم چینجر‘‘ میں لکھتے ہیں کہ ایک بار ان کا چیئرمین پی سی بی اعجاز بٹ سے ٹاکرا ہو گیا۔ وہ لکھتے ہیں، میں کرکٹ ٹیم سے نکالے جانے کے قریب تھا۔ اور پھر کوئی میری مدد کو آیا۔ یہ بلاول بھٹو زرداری تھے ۔ پیش کش بڑی دلچسپ تھی۔ اعجاز بٹ سے معاملات سلجھانے کے بد لے میں پیپلزپارٹی کے لوگوں کا کہنا تھا کہ میں نوجوا ن سیاست دان کے جلسوں میں اس کے ساتھ چلوں۔ میں نے بلاول کی مدد نہ لی۔ بلاول کے ہاتھ کٹھ پتلی کی طرح بندے ہیں زرداری ایک سرواوئیر ہیں، مگر وہ وہ نہ کرکٹ فین ہیں اور نہ ہی بڑے لیڈر ہیں۔ کتا ب میں آفریدی نے لکھا کہ وہ سب سے زیادہ جنرل ریٹائرڈ راحیل شریف سے متاثر ہیں۔ وہ ہر وقت ڈیلیور کرنے کے لیے تیار رہتے ۔ نوازشریف کے بارے میں شاہد آفریدی نے اپنی کتاب میں لکھا کہ میاں صاحب نے بھی انہیں اپنی پارٹی میں عہدے کی پیش کش کی۔ تاہم انہوں نے ایسا بالواسطہ اور اپنے مخصوص انداز میں کیا اور مجھے اپنے بلے پر شیر کا سٹیکر لگانے کو کہا۔ شاہد آفریدی کی جانب سے ’گیم چینجر ‘ میں الزامات کا جواب دینے کے لئے جاوید میانداد بھی میدان میں کود پڑے اور حیران کن طو ر پر بات کرتے ہوئے کہا کہ ہو سکتا ہے انجانے میں مجھ سے کوئی غلطیاں ہوئی ہوں اگر بیٹنگ نہ کروانے پر آفریدی کو مجھ پر غصہ ہے تو مجھے معاف کر دیں۔میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے جاوید میانداد نے کہا کہ اگر صلاح الدین بھائی ملیں توان سے شاہد آفریدی کا پوچھیں کہ وہ کیسے تھے اور میرا ان کے بارے میں کیا خیال تھا۔ انہوں نے مزید کہا کہ ان کے نیچے بہت سے لڑکے کھیلے ہیں ان سے پوچھا جا سکتا ہے کہ وہ کیسے تھے انہوں نے کہا کہ سعید انور اور دیگر بہت سے کھلاڑی بھی ہیں بیشک ان سے میرے بارے میں پوچھ لیں۔ جاوید میاں داد نے کہا کہ کتاب لکھنے کے لیے تو مصالحہ چاہئے ہی ہوتا ہے۔انہوں نے کہا کہ انہیں ہمیشہ عزت ملی ہے اور ہمیشہ اچھی عزت ملی ہے، جب وہ بیٹنگ کرنے جاتے تھے تو عوام کہتی تھی کہ اب ٹینشن ختم ہوگئی اور عوام کی دعائیں میرے ساتھ ہوتی تھیں۔خیال رہے کہ شاہد آفریدی کی کتاب گزشتہ دنوں منظرعام پر آئی ہے جس میں انہوں نے جاوید میانداد پر شدید تنقید کی ہے۔

متعلقہ خبریں