قسمت کا مذاق،لاکھوں کی لاٹریاں جیتنے والے رہے کنگال کے کنگال

2018 ,مئی 9



 

کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک): امریکہ میں مقبول پاور بال لاٹری کی انعامی رقم ایک ارب ڈالر سے تجاوز کر گئی ہے اور یہ شمالی امریکہ میں کسی بھی لاٹری کی سب سے بڑی انعامی رقم ہے۔ اور امریکہ میں لاٹری جیتنے کے امکانات 29 کروڑ 20 لاکھ میں سے ایک شخص کے ہیں۔ ماضی میں بڑی لاٹری جیت کربھی کوئی ہمیشہ کے لئے خوشحال نہیں رہا بلکہ اکثر مفلسی کی حد کو جا پہنچے۔  نیو جرسی کی رہائشی ایولین ایڈمز نے انیس سو پچاسی اور انیس سو چھیاسی میں مسلسل دو سال لاٹری جیتی، دونوں لاٹریوں کی کل انعامی رقم پانچ اعشاریہ چار ملین ڈالر تھی۔ ایولین ایڈمز نے دو بار خوش نصیبی کو مستقل سمجھا اور ساری رقم لیکر اٹلانٹک سٹی کے جوئے کے اڈوں پر جا پہنچی۔ جوئے کی میزوں اور سلاٹ مشینوں پر قسمت آزمائی میں ساری رقم ہارنے کے بعد ایولین ایڈمز اب اب ٹریلر پارک میں مفلسی کی زندگی جی رہی ہے۔

جنوبی کوریا کی وگ میکر خاتون جینٹ لی نے انیس سو ترانوے میں اٹھارہ ملین ڈالر کی لاٹری جیتی اور اس کا بڑا حصہ سیاسی جماعت کو عطیہ کیا۔ جینٹ لی کو جوا کی لت تھی اور اس کے ساتھ ساتھ وہ مخیر بھی تھی، بالآخر جینٹ کریڈٹ کارڈ کا قرض بھی ادا نہ کر پائی اور دو ہزار ایک میں خود کو دیوالیہ ڈیکلیئر کرنا پڑا۔برطانیہ کے جوڑے لارا اور جارج گرفتھس نے دو ہزار چھ میں ایک اعشاریہ آٹھ ملین ڈالر کی لاٹری جیتی۔ انعامی رقم میں سے چھ لاکھ ستر ہزار ڈالر کا گھر خریدا۔ ایک پورشے کار لی،مزید دو جائیدادیں خریدیں تاکہ ان کے کرایہ سے روزمرہ اخراجات پورے کر سکیں لیکن چھ سال بعد وہ کنگال ہو گئے۔

انیس سو اکسٹھ میں برطانیہ کی ویوین نکلسن نے تین ملین ڈالر کی لاٹری جیتی اور شاپنگ کی حسرتیں اس طرح پوری کیں کہ ہیرڈز سے ملبوسات خریدے،کئی کاریں لیں،امریکہ اور پورے یورپ کی سیر کی۔ آج اس کی الماریاں ملبوسات سے بھری پڑی ہیں لیکن پرس خالی ہے۔

برطانیہ کے معمر جوڑے جارج اور بیرل کیٹس نے دو ہزار بارہ میں ساڑھے تین ملین پائونڈ کی لاٹری جیتی اور چار بیٹوں کو ڈھائی ڈھائی لاکھ پائونڈ نو پوتے پوتیوں کو دس دس ہزار پائونڈ دیئے۔ کچھ رقم بہنوں کو بھی دی۔ اب بھی کچھ رقم انہوں نے پس انداز کر رکھی ہے اور لاٹری ٹکٹ خریدنا ان کا مشغلہ ہے۔

متعلقہ خبریں