یہی توکپتان کاکمال ہے : کھربوں ڈالرز کے قرضے چٹکیوں میں ختم ۔۔ عمران خان نے ایسی گیم کھیل دی کہ آئی ایم ایف بھی دنگ رہ گیا

2019 ,مئی 5



لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان میں کھربوں ڈالر کے قرضے اب چٹکیاں بجاتے ختم، عمران خان نے آخر کار زبردست حل تلاش کر ہی لیا ہے، ۔وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ صرف سیاحت کے فروغ سے ہی ہم بیرونی قرضوں سے نجات حاصل کرسکتے ہیں، پاکستان سیاسحت کیلئے ایک زبردست ملک ہے، سابق حکمرانوں کو معلوم ہی نہ تھا کہ پاکستان میں پرکشش مقام تھے،اپنی ثقافت اور تاریخی مقامات کو محسوس کرنے والی قومیں ان پر فخر محسوس کرتی ہیں، اب وقت آگیا ہے کہ آرکیالوجی کو اپنے تعلیمی نصاب کا حصہ بنایا جائے۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے لاہور میں شاہی قلعہ لاہور میں تصویری دیوار کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار، وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات فردوس عاشق اعوان، ڈائریکٹر جنرل وال سٹی لاہور کامران لاشاری، صوبائی کابینہ اور دیگر حکام بھی موجود تھے۔ وزیراعظم نے کہا کہ دنیا بھر میں تاریخی مقامات کو محفوظ بنایا جاتا ہے، آنے والی نسلوں کیلئے ایسے مقامات محفوظ بنانا ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں ہندو مت، بدھ مت اور دیگر بے شمار مقامات ہیں، تمام تاریخی اور سیاحی مقامات کو محفوظ بنانے کا فیصلہ کیا ہے،ماضی کے حکمران چھٹیاں لندن اور امریکہ میں گزارتے تھے۔وزیراعظم نے کہا کہ اپنی ثقافت اور تاریخ کو محفوظ کرنے والی قومیں فخر محسوس کرتی ہیں، پشاور کے وال سٹی کیلئے لاہور وال سٹی سے مدد حاصل کریں گے۔ پشاور وال سٹی کی تاریخ اڑھائی سال پرانی ہے۔انہوں نے کہا کہ ملائیشیا میں صرف ساحلی سیاحت سے بیس ارب ڈالر منافع ہوتا ہے، ترکی کی بھی سیاحت میںسالانہ آمدن چالیس ارب ڈالر ہے۔ انہوں نے کہا کہ صرف شمالی علاقہ جات ہی سوئٹزرلینڈ سے دگنا ہیں اور ہم صرف سیاحت کے فروغ سے بیرونی قرضوں سے نجات حاصل کرسکتے ہیں۔ وزیراعظم کا کہنا تھا کہ سابق حکمرانوں کو معلوم ہی نہیں تھا کہ پاکستان میں پرکشش مقامات تھے، اب وقت آگیا ہے کہ آرکیالوجی کو اپنے تعلیمی نصاب کا حصہ بنایا جائے۔انہوں نے کہا کہ مذہبی سیاحت کے حوالے سے پاکستان کا منفرد مقام ہے، آغا خان فائونڈیشن نے سیاحت کیلئے زبردست کام کیا ہے۔ وزیراعظم نے کامران لاشاری کو شاندار ایونٹ کے انعقاد پر مبارکباد دی دوسری جانب ایک خبر ہے بھی ہے کہ سابق وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے کہا ہے کہ مجھے علم نہیں شاہد خاقان عباسی نے میرے لیے پارٹی میں آنے کی خواہش کا اظہار کیا ہے۔انہوں نے ٹیکسلا میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ میں اس وقت پی ایم ایل این کا باقاعدہ حصہ نہیں ہوں۔ بلدیاتی نظام سے متعلق ان کا کہنا تھا کہ انہوں نے پہلے ہی کہا تھا کہ موجودہ حکومت بلدیاتی ادروں کو کام نہیں کرنے دے گی لیکن بلدیاتی ادروں کو اس طرح گھر نہیں بھیجا جاسکتا۔سابق وفاقی وزیر داخلہ نے کہا کہ میرے خیال ہےکہ بلدیاتی نظام کے خلاف عدالتی جنگ لڑی جائے گی، یہ صرف عوامی اظہار رائے سے بچنا چاہتے ہیں جو اس وقت ان کے خلاف ہے۔انہوں نے کہا کہ عدالت میں نٸے بلدیاتی نظام کے خلاف دونوں طرف سے جنگ لڑی جائے گی۔ان کا کہنا تھا کہ عالمی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) کی بہت ساری ہدایات ہم نے نہیں مانی تھیں، اور اب یہ خبر ہے کہ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ صرف سیاحت کے فروغ سے ہی ہم بیرونی قرضوں سے نجات حاصل کرسکتے ہیں، پاکستان سیاسحت کیلئے ایک زبردست ملک ہے،۔

متعلقہ خبریں