اسے کہتے ہیں باس ۔۔۔۔ کوچ بنتے ہی مصباح الحق نے قومی کرکٹ ٹیم کو کس مشن پر لگا دیا ؟ جانیے

2019 ,اگست 16



لاہور ۔ (مانیٹرنگ ڈیسک ) پاکستان کرکٹ بورڈ کے زیر اہتمام قومی کرکٹ ٹیم کے کھلاڑیوں کا کنڈیشننگ کیمپ 22 اگست سے 7ستمبر تک نیشنل کرکٹ اکیڈمی لاہور میں شروع ہوگا۔قومی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان مصباح الحق کوچنگ کرکے اپنے کوچنگ کیریئر کا آغاز کریں گے۔ قومی کرکٹ ٹیم کے کوچنگ اسٹاف کی عدم موجودگی میں سابق کپتان مصباح الحق نیشنل کرکٹ اکیڈمی کے کوچز کے ساتھ مل کر کیمپ میں شامل کھلاڑیوں کیلئے ٹریننگ پروگرام ترتریب دیں گے۔کنڈیشننگ کیمپ کے دوران کھلاڑی نیٹ پریکٹس کے ساتھ ساتھ فیلڈنگ پریکٹس بھی کریں گے۔ کیمپ میں کھلاڑیوں کی فٹنس میں بہتری پر بھی خصوصی توجہ دی جائیگی۔کیمپ کے انعقاد کا مقصد قومی کھلاڑیوں کو آئندہ ڈومیسٹک اور انٹرنیشنل سیزن سے قبل تیار کرنا ہے۔آئندہ ڈومیسٹک سیزن کا آغاز 12 ستمبر سے شیڈول قائد اعظم ٹرافی سے ہورہا ہے۔ قومی کھلاڑیوں کو قائداعظم ٹرافی میں 31 فرسٹ کلاس میچوں سمیت قومی ٹی ٹونٹی اور پاکستان ایک روزہ کپ کے ساتھ ساتھ ورلڈ ٹیسٹ چیمپئن شپ میں شامل 6 ٹیسٹ ، 3 ایک روزہ اور 9 ٹی ٹونٹی میچوں میں بھی شرکت کرنا ہے۔پی سی بی نے سنٹرل کنٹریکٹ میں شامل 14 کرکٹرز سمیت 20 کھلاڑیوں کو پری سیزن کیمپ میں شرکت کیلئے نیشنل کرکٹ اکیڈمی لاہور میں طلب کرلیا ہے۔ کھلاڑی 19 اگست کو لاہور پہنچیں گے۔ 2 روزہ فٹنس ٹیسٹ کے بعد قومی کھلاڑی 22 اگست سے 7 ستمبر تک این سے اے میں جاری کنڈیشننگ کیمپ میں شرکت کریں گے۔اظہر علی انگلش کاؤنٹی سمر سیٹ سے معاہدہ مکمل کرنے کے بعد کیمپ جوائن کریں گے۔بابراعظم، فخر زمان، عماد وسیم، محمد عباس اور محمد عامر کو کاؤنٹی سیزن کے باعث کیمپ میں شرکت سے چھوٹ دی گئی ہے۔ یہ پانچوں کھلاڑی قائداعظم ٹرافی کے آغاز سے قبل پاکستان پہنچ جائیں گے۔کیمپ میں سنٹرل کنٹریکٹ میں شامل عابد علی، اسد شفیق، اظہر علی، حارث سہیل، حسن علی، امام الحق، محمد رضوان، سرفراز احمد، شاداب خان، شاہین شاہ آفریدی، شان مسعود، عثمان شنواری، وہاب ریاض اور یاسر شاہ کوطلب کیا گیا ہے۔نان سنٹرل کنٹریکٹ یافتہ کھلاڑیوں میں آصف علی، بلال آصف، افتخار احمد، میر حمزہ، راحت علی اور ظفر گوہر کو بھی کیمپ میں رپورٹ کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔

متعلقہ خبریں