جوجرم کرے گا وہ سزا پائے گا ۔۔۔۔ تبدیلی سرکار نے اپنے ہی اراکین اسمبلی کو نا قابل یقین سرپرائزدے ڈالا، کون کون سے بڑے نام رگڑے میں آئے اوروجہ کیا بنی ؟ جانیے

2019 ,مارچ 14



اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) حکومتی اراکین سمیت قومی اسمبلی کے ان تماما اراکین کی شامت آگئی ہے ، جنھوں نے ایف بی آر کو ٹیکس جمع نہیں کرائے فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر ) نے ٹیکس نہ دینے والے اراکین پارلیمنٹ کو نوٹس بھیجنے کا حتمی فیصلہ کرلیا گیا ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ایسے 200 اراکین پارلیمنٹ ہیں جو ٹیکس ریٹرن جمع نہیں کراتے، ان تمام اراکین اسمبلی کو نوٹس بھجے جائیں گے، اراکین پارلیمنٹ نے2018 کےگوشوارے جمع نہیں کرائے،ٹیکس ریٹرن فائل نہ کرنیوالوں میں اراکین قومی اورصوبائی اسمبلی شامل ہیں، ذرائع کا کہنا ہے کہ پارلیمنٹ کے 200 اراکین نے پچھلے سال ٹیکس گوشوارے جمع نہیں کرائے، سینیٹ کے متعدد اراکین نے بھی اپنے ٹیکس گوشوارے جمع نہیں کرائے، ذرائع کا کہنا ہے کہ اراکین پارلیمنٹ نےمقررہ تاریخ تک اپنےٹیکس ریٹرن فائل نہیں کیے، یاد رہے کہ اس سے قبل آج یہ خبر بھی آئی تھی کہ وزیراعظم عمران خان نے پنجاب اسمبلی میں ارکان کی تنخواہوں میں اضافے پر ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہمارے پاس عوام کو بنیادی سہولتیں فراہم کرنے کے وسائل نہیں، یہ فیصلہ بالکل بلاجواز ہے، تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے بیان میں کہا پنجاب اسمبلی کی جانب سے اراکین اسمبلی، وزراء خصوصاً وزیراعلیٰ کی تنخواہوں اور مراعات میں اضافے کافیصلہ سخت مایوس کن ہے، پاکستان خوشحال ہوجائےتوشاید یہ قابلِ فہم ہومگر ایسے میں جب عوام کو بنیادی سہولیات کی فراہمی کیلئے بھی وسائل دستیاب نہیں،یہ فیصلہ بالکل بلاجواز ہے، یاد رہے گذشتہ روز پنجاب اسمبلی میں اراکین کی تنخواہوں میں اضافے کا بل کثرت رائے سے منظور کرلیا گیا تھا ، جس کے مطابق اراکین اسمبلی کوماہانہ ایک لاکھ 95 ہزارتنخواہ ملےگی، قرارداد کے مطابق اراکین اسمبلی کی بنیادی تنخواہ 80 ہزارروپےکردی گئی جبکہ ہاؤس رینٹ کی مدمیں 50 ہزارروپےملیں گے اور صوبائی وزرا2 لاکھ75 ہزار روپے ماہانہ تنخواہ لیں گے، اسپیکرپنجاب اسمبلی ہر ماہ 2 لاکھ 60ہزارروپے ، ڈپٹی اسپیکر2لاکھ45 ہزارروپے اور وزیراعلیٰ پنجاب4لاکھ25 ہزارروپےتنخواہ ماہانہ لیں گے، خیال رہے وزیر اعظم عمران خان کی سیلری سلپ پہلی بارمنظرعام پرآ گئی ہے، جس کے مطابق عمران خان ملک کے وزیراعظم ہوتے ہوئے وزرا سے بھی کم تنخواہ وصول کرر ہے ہیں، وزیراعظم عمران خان کو ہرماہ ایک لاکھ چھیانوے ہزار روپے تنخواہ ملتی ہے، عمران خان کی بنیادی تنخواہ ایک لاکھ سات ہزار دو سو اسی روپے ہے، وزیراعظم کو مہمانداری الاؤنس کی مد میں پچاس ہزاراورایڈہاک ریلف الاؤنس کےاکیس ہزارچارسو چھپن روپےملتے ہیں۔، اور اب یہ خبر آئی ہے کہ حکومتی اراکین سمیت قومی اسمبلی کے ان تماما اراکین کی شامت آگئی ہے ، جنھوں نے ایف بی آر کو ٹیکس جمع نہیں کرائے فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر ) نے ٹیکس نہ دینے والے اراکین پارلیمنٹ کو نوٹس بھیجنے کا حتمی فیصلہ کرلیا گیا ہے، ذرائع کا کہنا ہے کہ ایسے 200 اراکین پارلیمنٹ ہیں جو ٹیکس ریٹرن جمع نہیں کراتے، ان تمام اراکین اسمبلی کو نوٹس بھجے جائیں گے، اراکین پارلیمنٹ نے2018 کےگوشوارے جمع نہیں کرائے،ٹیکس ریٹرن فائل نہ کرنیوالوں میں اراکین قومی اورصوبائی اسمبلی شامل ہیں، ذرائع کا کہنا ہے کہ پارلیمنٹ کے 200 اراکین نے پچھلے سال ٹیکس گوشوارے جمع نہیں کرائے، سینیٹ کے متعدد اراکین نے بھی اپنے ٹیکس گوشوارے جمع نہیں کرائے، ذرائع کا کہنا ہے کہ اراکین پارلیمنٹ نےمقررہ تاریخ تک اپنےٹیکس ریٹرن فائل نہیں کیے، ان کے خلاف سخت ایکشن لیا جائے گا ،

متعلقہ خبریں