شہباز شریف اور زرداری کا بیان

2019 ,اگست 15



لاہور(سلیم اختر): اللہ کا واسطہ قوم کو بے وقوف بنانا چھوڑ دو۔ اب تو تپتے توے پر بھی بیٹھ کر یہ بیان دو گے تو قوم تم پر یقین نہیں کریگی۔ پچھلے تیس سال تم حکمران رہے‘ اس وقت کشمیر پر تمہاری بولتی کیوں بند تھی؟ اسی قاتل کو تم نے اپنے گھر بلا کر عزت دی تھی‘ اس وقت تمہاری غیرت کہاں تھی؟ یہ قاتل اس وقت بھی کشمیر میں خونریزی کررہا تھا۔ خدا کا واسطہ قوم کو اب مزید بے وقوف نہ بناﺅ۔ نوازشریف نے درست کہا کہ شہباز کی باتوں کو سنجیدہ نہ لیا کریں۔ 
زرداری بکواس کرتا ہے کہ مہاجروں کو پاکستان میں دھکے دیکر بھیجا گیا‘ ہم نے پناہ دی‘ یہ ملک ہم نے بنایا ہے۔ اس سے کوئی پوچھے کہ اسکے کتنے اباو اجداد نے پاکستان بننے میں قربانی دی۔ جب ملک بن گیا‘ مہاجروں نے اپنے خون سے اس ملک کی بنیاد رکھ دی تو یہ لوگ ڈکیت بن کر اس ملک کو لوٹنے آگئے۔ زرداری اپنے ضمیر سے پوچھے کہ اس نے تیس سال میں سوائے ڈکیتی کے اس ملک میں اور کیا کیا؟؟؟؟ ان کا ضمیر ہو تو یہ اس سے سوال پوچھیں گے نا۔ اس ڈکیتی پر بلاول اگر اپنے باپ کا گریبان پکڑلے تو پوری قوم اس کو عزت دیگی۔ لیکن کیا کریں‘ ان سب نے اس قافلے پر بھونکنا اپنا وطیرہ بنا لیا ہے جو اس ملک کی سمت درست کرنے چلا ہے۔ (”کسی“ کے بھونکنے سے قافلے رکا نہیں کرتے) 
 

متعلقہ خبریں