سینٹ الیکشن میں دھوکہ دینے والوں کو پارٹی سے نکالنے کے سوال پر مریم نواز کا انوکھا جواب۔۔۔ کیا کہا؟ جان کر آپ کی ہنسی نہیں رکے گی

2019 ,اگست 1



اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک ) صادق سنجرانی کے چئیرمین سینیٹ برقرار رہنے اور متحدہ اپوزیشن کی تحریک عدم اعتماد ناکام ہونے کے بعد صدرمسلم لیگ ن اور اپوزیشن لیڈر شہباز شریف نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ جن لوگوں نے ضمیر بیچے ان کے نام سامنے لائیں گے۔ شہباز شریف نے کہا کہ ٹائم فریم میں نام سامنے لائیں گے جنہوں نے سسٹم کو نقصان پہنچایا۔تاہم مریم نواز شریف نے دھوکہ دینے والوں کو پارٹی سے نکالنے کے سوال پر بے بسی کا اظہار کیا ہے۔ ایک ٹویٹر صارف اور لیگی کارکن نے ٹویٹر پر مریم نواز شریف کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ’’ہم آپ کے ساتھ مل کر پٹھ میں چھرا گھوپنے والوں کے نام سامنے لائیں گے، انہیں شرم دلائیں گے اور پارٹی سے نکال دیں گے‘‘۔ٹویٹ کے جواب میں مریم نواز شریف نے صرف اتنا لکھا کہ ’’میں نہیں کر سکتی‘‘۔اس سے ظاہر ہو رہا ہے کہ مریم نواز شریف اس حوالے سے بے بس ہیں جبکہ وہ مسلم لیگ ن کی نائب صدر ہیں۔ دوسری جانب حزب اختلاف کے مرکزی رہنماء میر حاصل بزنجو نے سینیٹ الیکشن میں شکست کا الزام جنرل فیض حمید پر عائد کردیا،حاصل بزنجو کے الزام کو سوشل میڈیا پر شرمناک قرار دیا جا رہا ہے۔ حاصل بزنجو نے ایک سوال پر’’ خفیہ رائے شماری کے وقت ان کو پھر کون لے گیا؟ کے جواب میں کہا کہ یہ جنرل فیض کے لوگ ہیں، جنرل فیضآئی ایس آئی کے چیف ہیں، جانتے ہیں آپ؟ یہ ان کے لوگ ہیں۔انہوں نے ایوان بالا میں چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کیخلاف تحریک عدم اعتماد مسترد ہونے پر میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ میں بالکل پریشان نہیں ہوں، میں کیوں پریشان ہوں گا؟ انہوں نے ایک سوال پر کہا کہ ہمارے 64 امیدوار تھے، سب نے دیکھا وہاں64 امیدوار کھڑے ہوئے تھے۔ امیدوار کھڑے ہوئے تھے۔

متعلقہ خبریں