’’ عمران خان کے فیصلے منظور نہیں ‘‘ جاوید میاندان کھل کر میدان میں آگئے، وزیر اعظم کے خلاف بغاوت کر دی

2019 ,اپریل 27



کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) لیجنڈری کرکٹر اورقومی ٹیم کے سابق کپتان جاوید میانداد بھی وزیر اعظم عمران خان کے ڈیپارمنٹل کرکٹ ختم کرنے کے فیصلے کے خلا ف میدان میں آگئے ،انہوں نے ”کپتان “ سے سوال کیا کہ کیا آپ بھی پیسوں کے لیے کاﺅنٹی کرکٹ نہیں کھیلتے رہے؟،سب اداروں نے ڈپارٹمنٹل کرکٹ ختم کر دی ،اب کرکٹرز کہاں سے آئینگے؟۔کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے جاوید میانداد کاکہنا تھا کہ ڈپارٹمنٹل سپورٹس بند کرکے کھلاڑیوں کو بے روزگار کیاجا رہا ہے ،سب اداروں نے ڈپارٹمنٹل کرکٹ ختم کر دی ،اب کرکٹرز کہاں سے آئینگے،عمران خان پرائم منسٹرکیاآپ نے خود پیسوں کیوجہ سے کاو ¿نٹی کرکٹ نہیں کھیلی؟،سب پیسوں کی لیے کاو ¿نٹی کرکٹ کھیلتے ہیں ،آپ نے پہلے سے موجود سپورٹس کے فروغ کے اداروں کو ختم کردیا ،خان صاحب ہمارے لڑکے بھوکے مررہے ہیں،نوکریاں ختم،ملک قرض میں ڈوبا ہے ، تو سپورٹس مین کہاں سے آئیں گے ، آج ہمارے کھلاڑی بھوکے مر رہے ہیں،کیاکریں ؟،کھلاڑی ڈاکے ماریںیا چوریاں کریں؟،20کروڑ میں سے 15کروڑعوام چوری نہ کریں ڈاکے نہ ماریں تو پیٹ کے لیے کیاکریں؟،حکومت بیروزگارکھلاڑیوں کو نوکریاں دے،کھلاڑیوں کی لیے نوکریاں نہ ہونےکی وجہ سے ہاکی تباہ ہوئی،میں نوجوان کرکٹرزکو پریشان نہیں دیکھ سکتا۔ان کا مزید کہنا تھا کہ عمران خان ایک سرکلرجاری کریں کہ تمام ادارے اپنی ٹیمیں بنائیں، حکومت ڈپارٹمنٹل سپورٹس کی حوصلہ شکنی کے بجائے حوصلہ افزائی کرے کیوں کہ بہت سے سپورٹس مین نے نوکریاں ملنے کے بعد اپنے بچوں کو اعلیٰ تعلیم دلوائی ،میں نے بھی اپنی اولاد کو کرکٹ نہیں کھلوائی بلکہ تعلیم دلوائی ،ہر بڑا ادارہ20 سے 25سپورٹس مین کو لازمی ملازمت دے ،سپورٹس کے فروغ کی لیے متبادل سٹرکچر بنائے بغیرسسٹم ختم کرنادرست نہیں ہوگا،ڈپارٹمنٹل کرکٹ کی وجہ سے ہم چیمپئن بنے ہیں۔جاوید میانداد کا مزید کہنا تھا کہ عمران خان آپ نے جن سے ووٹ لیے ان سے پوچھیں وہ کیاکررہے ہیں،لوگ مجبوراًکرکٹ اور ہاکی کھیلتے ہیں اورآپ مجبوری سے فائدہ اٹھاتے ہیں،عمران خان سے ملاقات میں ڈپارٹمنٹل کرکٹ کی بات نہیں ہوئی، نان پروفیشنلز لوگوں کو سپورٹس دی گئی ، سپورٹس میں ووٹ سے منتخب ہونے کا سسٹم ختم ہونا چاہیے ۔واضح رہے وزیر اعظم عمران خان نے کچھ عرصہ قبل ڈیپارٹمنٹل کرکٹ کے خاتمے کی خواہش کا اظہار کیا تھا اور اس حوالے سے پاکستان کرکٹ بورڈ نے 6فرسٹ کلاس ٹیموں پر مشتمل ڈومیسٹک سیزن کے لیے اپنی تجاویز بھی تیار کرلی ہیں جس کے بعد حبیب بینک نے ٹیم ختم کرنے کا اعلان کردیا تھا۔

متعلقہ خبریں