فلمیں جن میں ہیرو اور ولن کا آمنا سامنا تک نہیں ہوا

2016 ,نومبر 19



 

 

لاہور(ویب رپورٹ)کسی بھی فلم میں ہیرو اور ولن کون ہوتے ہیں؟ دو ایسے دشمن جن میں سے ایک خیر اور دوسرا شر کا نمائندہ ہوتا ہے اور دونوں ایک دوسرے کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر اپنے مقصد کے حصول کے لیے کام کرتے ہیں، لیکن کیا آپ نے کبھی ایسی فلم دیکھی ہے، جس میں کبھی ہیرو اور ولن کا آمنا سامنا ہوا ہی نہ ہو؟ ایسی کون سی فلم ہو سکتی ہے؟ ایسی فلمیں واقعی موجود ہیں اور شاہکار فلمیں ہیں۔ ہم آپ کو ایسی بہترین فلموں کے بارے میں بتائیں گے کہ جس میں ہیرو اور ولن کا کبھی آمنا سامنا نہیں ہوا: زوڈیئیک ہیرو رابرٹ گرے اسمتھ اور ولن زوڈیئیک کا پوری فلم میں کبھی سامنا نہیں ہوا۔ ڈیوڈ فنچر کی یہ فلم ایک عادی قاتل کی سچی کہانی ہے جس کو کبھی گرفتار نہیں کیا جا سکا۔ 2007ء کی اس فلم میں ہیرو ایک اخبار میں کارٹونسٹ تھا جس پر اس قاتل کو ڈھونڈنے کا بھوت سوار تھا۔ اس پوری کہانی میں کئی افراد پر زوڈیئیک ہونے کا شبہ ہوا، لیکن آج تک یہ ثابت نہیں ہوا کہ حقیقی قاتل کون تھا؟ جب واقعہ اصل زندگی میں ہی پیش نہیں آیا تو فلم میں ہیرو اور ولن آمنے سامنے کیسے آتے؟ بریو ہارٹ 1995ء کی یہ شاہکار فلم سکاٹ لینڈ کی تحریک آزادی کے ہیرو ولیم والس کے بارے میں ہے۔ اس زمانے کے برطانوی بادشاہ کنگ ایڈورڈ اول تھے، جو اس فلم کے ولن ہیں۔ بلاشبہ فلم میں دونوں کی افواج کا فالکرک کے مقام پر ٹکراؤ دکھایا گیا ہے، لیکن دونوں آمنے سامنے نہیں آئے۔ والس کو جنگ میں شکست ہوئی۔ انہوں نے بادشاہ کو پکڑنے اور قتل کرنے کے لیے تعاقب کیا ،لیکن خود دھر لیے گئے اور بعد میں انہیں سزائے موت دے دی گئی۔ یوں پوری فلم میں ہیرو اور ولن دوبدو نہیں آئے۔ نو کنٹری فار اولڈمین 2007ء کی اس فلم میں ہیرو کا کردار ایک بوڑھے پولیس والے کا ہے ،جس کانام ایڈ ٹام بیل ہے جبکہ ولن اینٹن چیگر نامی ایک کرائے کا قاتل ہے، جو لوگوں کو شوقیہ بھی مارتا ہے۔ منشیات فروشوں کے درمیان ہونے والی ایک لڑائی کے بعد ایک بڑی رقم مقامی شخص کے ہاتھ لگتی ہے، جو اسے لے کر بھاگ جاتا ہے۔ ولن اس کے تعاقب میں ہوتا ہے اور پولیس والا اسے پکڑنے کے لیے بے تاب۔ تجسس سے بھرپور اس فلم کی کہانی اس طرح ختم ہوتی ہے کہ ہیرو اور ولن دونوں زندہ رہتے ہیں، لیکن ان کا کبھی آمنا سامنا نہیں ہوتا۔ ٹرومین شو 1998ء کی اس فلم کی کہانی زبردست ہے۔ مرکزی کردار ٹرومین بربینک ایک ایسی زندگی کو حقیقت سمجھ کر گزارتا ہے، جو دراصل ڈراما ہوتی ہے۔ اس کے اردگرد موجود تمام کردار یہاں تک کہ اس کی ماں، باپ اور بیوی تک حقیقت میں اداکار ہوتے ہیں اور یوں وہ دنیا کے مقبول ترین ریالٹی شو کا ایسا کردار، جو اس زندگی کو حقیقت سمجھ کر گزار رہا ہے۔ اس شو کے خالق کرسٹوف ہیں، جنہوں نے یہ دنیا بسائی ہے اور ایک شخص کی زندگی سے کھیل رہے ہیں۔ ٹرومین کا تجسس بالآخر اس راز سے پردہ اٹھا دیتا ہے اور ہیرو دوبدو آئے بغیر اس کہانی کا خاتمہ کردیتا ہے۔ (اُردو ٹرائب سے ماخوذ)

متعلقہ خبریں