کھڑی نیم کے نیچے ہوں تو ہیکلی

2017 ,جولائی 1



لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک): فرمان صاحب کو خرمستیاں سوجھ رہی ہیں۔ اگر انکی دعوت پر مرکزی وزیراطلاعات خیبر پی کے پہنچ گئیں تو چار ارب درخت گنتے گنتے انکی عمر بیت جائیگی۔ عوام مسائل در مسائل میں گھرے ہیں‘ انکے پاس نہ روٹی ہے نہ کپڑا جبکہ فرمان صاحب نے ان مسائل کا حل درخت لگا کر نکالنے کی کوشش کی ہے۔ چلیں عوام کو روٹی روزگار نہ سہی‘ درختوں کی ٹھنڈی چھائوں ہی سہی۔ یہ قوم کی قسمت کہ انکے لگائے درخت پھلدار ہوتے ہیں یا نیم کے۔ اگر یہ تمام درخت نیم کے ہوئے تو خیبر پی کے کی قوم سندھ کی مشہور لوک گائیک مائی بھاگی کا یہ گانا ضرور گنگنائے گی… ع

کھڑی نیم کے نیچے ہوں تو ہیکلی

عوام پہلے ہی مہنگائی کی کڑوی گولیاں کھا کھا کر تنگ آچکے ہیں۔ خیبر پی کے کے عوام کو روٹی روزگار نہ سہی‘ انکے لگائے درختوں سے آکسیجن ضرور ملے گی جس سے انکی سانسیں چلتی رہیں گی اور وہ انہیں الیکشن میں منتخب کرتے رہیں گے۔ اور ہاں… اس وقت فرمان صاحب انتظامیہ کو کیا تجویز پیش کرینگے جب کوئی سزائے موت کا قیدی اپنی آخری خواہش کا اظہار کربیٹھے کہ وہ یہ سارے درخت گننا چاہتا ہے!!!

متعلقہ خبریں