مولانا چن چڑھانے کیوں نہیں آئے؟ اب پتہ چلا۔۔۔۔

2017 ,جولائی 7



لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک): یار دوست تو سمجھتے تھے مولانا پوپلزئی سیر تفریح یا تبلیغی دورے پر ملک سے باہر ہیں یا سرکاری عمرہ پیکج سے مستفید ہو رہے ہیں۔ الغرض جتنے منہ اتنی باتیں۔ مولانا جہاں بھی رہیں خوش رہیں۔ اپنے خرچے پر رہیں یا حکومت کے خرچے پر کسی کو کچھ لینا دینا نہیں۔ پاکستانی اس خوشی سے پھولے نہیں سما رہے تھے کہ اس بار ماہ رمضان میں ہی مولانا ملک سے باہر چلے گئے تھے۔ یوں قوم کو ایک ہی عید روزسعید منانے کی سعادت نصیب ہو گی۔ مگر برا ہو مولانا کے چیلے چانٹوں کا جو ان کی غیر موجودگی میں بھی اپنا لُچ تلنے سے باز نہیں آئے اور نہایت چالاکی سے وار کر گئے۔ مگر یہ وار کارگر ثابت نہ ہوا۔

بہت کم لوگوں نے ان کے چاند پر یقین کیا۔ اب پشاور کے چند علما کا خیال ہے کہ پوپلزئی صاحب سیر تفریح یا تبلیغ پر نہیں گئے نہ ہی عمرہ پر گئے ہیں۔ انہیں ملک بدر کیا گیا ہے۔ یا الٰہی یہ ماجرا کیا ہے۔ رمضان خیر خیریت سے گزر گیا۔ عید پرسکون رہی اب یہ مولانا کے چاہنے والوں کو پتہ چلا کہ مولانا چن چڑھانے کیوں نہیں آئے۔ یہ لوگ تو لگتا ہے مولانا کا رخ زیبا دیکھنے کو ترس گئے ہیں۔ ویسے مولانا کی یہ ملک بدری معلوم نہیں خود ساختہ ہے یا جبری۔ اگر جبری ہوتی تو ماہ ڈیڑھ ماہ یہ شور مچانے والے خاموش کیوں رہے۔ انہیں سانپ کیوں سونگھ گیا تھا۔ ہو سکتا ہے مولانا پوپلزئی نے حکومت اور عوام میں اپنی بے قدری دیکھ کر خود ہی خود ساختہ جلاوطنی اختیار کر لی ہو۔ وجہ جو بھی ہو ملک میں ایک ہی روز عید منانے والوں نے اس پر سکھ کا سانس لیا ہے…

متعلقہ خبریں