وزیر اعلیٰ سندھ کا دورہ کراچی۔ 260روپے کے دہی بھلے خریدے

2017 ,مئی 31



لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک): وزیر اعلیٰ سندھ بھی لگتا ہے شہباز سپیڈ سے متاثر ہیں۔ اب وہ لاکھ منہ سے انکار کریں مگر انکی چال چلن سے پتہ چل رہا ہے کہ وہ بھی اب اچانک ہنگامی دوروں پر نکلنے لگے ہیں۔ کبھی کچرا صاف کرنے کی نگرانی کرتے ہیں کبھی گلیوں بازاروں کا معائنہ کرتے ہیں۔ مگر افسوس یہ کراچی والے تو نجانے کس مٹی کے بنے ہوئے ہیں کہ کسی کی سنتے ہی نہیں۔ کچرا وہیں کا وہیں ہے ٹوٹی پھوٹی گلیوں اور بازاروں میں بھی۔ اب وزیر اعلیٰ نے گزشتہ روز اچانک گاڑی روک کر جس طرح 260روپے کے دہی بھلے خریدے اگر مقصد قیمتیں چیک کرنا ہوتا تو لوگ خوش ہوتے۔انہیں تو یہ دہی بھلے تقریباً مفت ہونگے پڑے ہیں کیونکہ اتنے پیسوں میں تو صرف دو پلیٹ ہی ملتے ہیں۔ یہ غریب عوام کو لوٹنے والے دکاندار نے تو وزیر اعلیٰ کو دیکھتے ہی سرکاری ریٹ سے بھی کم قیمت پر شاہ جی کو شاپر بھر کر دہی بھلے دئیے ہوں گے اور شاہ جی بھی خوش ہو رہے ہوں گے کہ واہ بھی واہ اتنے پیسوں میں اتنے زیادہ دہی بھلے۔ حالانکہ اگر وہ صدر ممنون حسین سے کسی اچھی دکان کا پتہ پوچھ لیتے تو زیادہ بہتر تھا۔ وہ انہیں صحیح گائیڈ کرتے اور انہیں اس سے بھی لذیذ دہی بھلے مل سکتے تھے اور وہ بھی مفت۔ شہباز شریف کا تو مسئلہ ہی یہی ہے کہ وہ کسی پر اعتبار نہیں کرتے خود دوڑے دوڑے جہاں شک پڑتا ہے پہنچ جاتے ہیں۔ یوں وہ سرکاری افسران اور بیوروکریسی کو بھی ہلکان کرتے رہتے ہیں۔ اب وزیر اعلیٰ سندھ بھی اگر اپنے صوبے میں سندھ سپیڈ کا شہرہ چاہتے ہیں تو انہیں بھی وقت بے وقت موقع با موقع سب کو تنگ کرنا پڑے گا۔ ادھر ادھر دوڑانا پڑے گا جس کی شاید سندھ انتظامیہ کو زیادہ پریکٹس نہیں۔

متعلقہ خبریں