سعودی عرب امریکہ کے لئے دودھ دینے والی گائے ہے: خامنائی

2017 ,مئی 30



لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک): امریکی تو اپنا نفع و نقصان دیکھ کر ہی کام کرتے ہیں۔ اس وقت سعودی عرب اور دیگر عرب ممالک میں پٹرول کی بے تحاشہ آمدنی سے جو دولت کی ریل پیل نظر آرہی ہے اس سے تو ویسے ہی امریکہ کیا اکثر مغربی ممالک کی رال ٹپکنے لگتی ہے۔ ایشیائی لوگوں کو تو ہر عرب ویسے بھی ’’ارب‘‘ نظر آتا ہے۔ مگر اقوام مغرب خاص تیز طرار ہیں، انہیں مال نکلوانا بھی آتا ہے۔ سیاست تو دیکھیں ٹرمپ صاحب کی کہ انہوں نے سعودی عرب کو ایران سے ڈرا کر اربوں ڈالر کے اسلحہ کی خریداری کے معاہدے کر لئے۔ یوں سعودی خزانے خالی کرکے اپنا خزانہ بھر لیا۔ فائدہ اس میں امریکہ کو ہی ہے۔ اب اگر ایران کے روحانی قائد آیت اللہ خامنائی اس حقیقت سے باخبر ہیں تو وہ خود ہی اپنے مسلمان بھائی کو لٹنے سے بچانے کے لئے پہل کیوں نہیں کرتے، کہ امریکی خزانہ نہ بھرے۔ سعودی عرب سے تمام اختلافات بیٹھ کر حل کیوں نہیں کرتے، صاف لگتا ہے کہ وہ بھی امریکی سازشوں کا شکار ہیں۔ صرف صدر ٹرمپ ہی نہیں، ان کی بیٹی ایوانکا نے بھی اپنے دورۂ سعودی عرب میں عرب شیوخ کی بیگمات سے ایک ڈیڑھ گھنٹہ ملاقات کی، ان سے گپ شپ لگائی اور انہیں اپنی فلاحی تنظیم کے حوالے سے جو کسی افریقی ملک میں کام کر رہی ہے ایسی کہانی سنائی کہ ان عرب بیگمات نے ٹشو پیپرز سے اپنے آنسو پونچھتے ہوئے اس ساحرہ کو بیٹھے بٹھائے اربوں ریال کے چیک بطور عطیہ دیئے۔ اس سے پتہ چلتا ہے کہ عرب شیخ ہو یا شیخہ دونوں ابھی اہل مغرب کی چالاکی، عیاری اور فسوں کاری کی گرد کو نہیں پہنچ سکے۔ ورنہ ایوانکا یوں گھنٹہ بھر میں اربوں ریال اور ان کے والد کھربوں ڈالر بٹور کرنہ لے جاتے۔

متعلقہ خبریں