پانامہ لیکس کا شکار جوزف مسکٹ پھر مالٹا کے وزیراعظم منتخب۔

2017 ,جون 6



لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک): یہ تو بڑی عجیب بات ہے۔ ایک طرف ہمارے وزیراعظم میاں نوازشریف ہیں جو ’’گٹے گوڈوں‘‘ تک پانامہ لیکس کیس میں پھنسے ہوئے ہیں۔ دوسری طرف مالٹا کے وزیراعظم جوزف مسکٹ ہیں جو پانامہ لیکس میں ملوث ہو کر بھی ایک مرتبہ پھرالیکشن جیت کر مالٹا کے وزیراعظم بن گئے ہیں۔ ویسے مسٹر جوزف تھے واقعی بڑے دل والے۔ انہوں نے خود اپنی حکومت تحلیل کرکے خود الیکشن کرائے تھے۔ غالباً انہیں اپنے عوام پر بھرپور اعتماد تھا اس لئے جواب میں عوام نے بھی ان پر اپنے بھرپور اعتماد کا اظہار کرکے پانامہ لیکس کے الزامات کو اپنے ووٹوں کی طاقت سے مٹا کر رکھ دیا۔ اس سے تو پتہ چلتا ہے کہ عوام کو اگر اپنی حکومت پر اعتماد ہو تو اس پر کسی بھی قسم کے الزامات عوام کو مرعوب نہیں کر سکتے۔ اب یہ بات وزیراعظم میاں نوازشریف کیلئے تسلی کا باعث ہو سکتی ہے کیونکہ اس وقت جو باد مخالف ان کو چاروں طرف سے گھیرے ہوئے ہے۔ اس کا وہ قدرے حوصلے سے مقابلہ کر رہے ہیں۔ اگر وہ ہمت سے کام لیتے رہے تو کیا معلوم یہ باد مخالفت ان کا سفینہ ڈبونے کی بجائے اس کو باحفاظت ساحل مراد تک پہنچانے کا باعث بن جائے۔ عوام جہاں کی بھی ہوں وہ ووٹ اپنی پسند سے ہی دیتے ہیں‘بس فرشتہ درمیان میں آ کر پر نہ مارے تو مالٹا کی روایت کیا معلوم پاکستان میں بھی دہرائی جائے۔ حزب اختلاف کو اب اس طرف بھی غور کرنا پڑے گا اور پانامہ کیس کے علاوہ دوسرے امور پر بھی توجہ دینا ہو گی۔ مالٹا الیکشن کے نتائج ان کیلئے بھی چشم کشا ہو سکتے ہیں۔

متعلقہ خبریں