لاہور کی سڑکوں پر نوازشریف بے قصور کے بینرز کی بہار آ گئی

2017 ,اگست 3



لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک): لاہور کی سڑکوں پر اس مرتبہ نوازشریف بے قصور کے بینرز کی بہار آ گئی مگر ان میں وہ مزہ نہیں جو اس قسم کے بینروں کو دیکھ کر آتا ہے۔ یہ بینرز اس وقت سجتے ہیں جب ان کے سائے تلے لوگوں کا ہجوم بھی نعرے لگاتا ہو۔ جس طرح اب نوازشریف کو بے قصور قرار دیا جا رہا ہے اس سے بے نظیر بھٹو مرحومہ کی یاد تازہ ہو گئی ہے۔ مگر جب محترمہ کے خلاف الزامات کی بوچھاڑ ہوئی‘ انہیں برطرف کیا گیا تو پیپلز پارٹی والے سڑکوں پر بے نظیر بے قصور کے نعرے لگاتے سینہ کوبی کرتے پھرتے تھے۔ جگہ جگہ بے نظیر بے قصور کے بینرز نظر آتے تھے۔ جس سے یہ مطالبہ جاندار سا لگتا تھا۔

ان کے مقابلے میں تو آج نوازشریف کی پوزیشن بہت مضبوط ہے۔ مگر نجانے کیوں وہ جوش و خروش نظر نہیں آ رہا جو ہونا چاہئے تھا۔ بے شک یہ بینرز خوبصورت ہیں‘ دیدہ زیب ہیں کافی قیمتی بھی ہوں گے۔ مگر ہزاروں ووٹ حاصل کرنے والے ان ایم این اے اور ایم پی ایز میں اور نامی گرامی کارکنوں میں (براہِ مہربانی کن ٹُٹّے نہ پڑھا جائے) وہ جوش و جذبہ نہیں جو پیپلز پارٹی والوں کا خاصہ ہوتا ہے۔ مسلم لیگ (ن) والوں کی حالت دیکھ کر تو لگتا ہے کہ یہ سب کچھ وہ نیم دلی سے کر رہے ہیں۔ کہاں گئے وہ رہنما جن کے بقول ان کے اشارے پر لاکھوں لوگ باہر آ جائیں گے۔ ان بینروں کو دیکھ کر تو لگتا ہے یہ سب دودھ پینے والے مجنوں ہیں جو اندر بیٹھنے میں ہی عافیت محسوس کرتے ہیں۔

متعلقہ خبریں