ہسپتالوں میں زندہ مریض کو صحت یاب اور مردے کو زندہ کرنے کا معجزہ

2017 ,اگست 3



لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک): خدا جانے یہ کون سا ٹوٹکا ہمارے سرکاری ہسپتالوں میں آزمایا جانے لگا ہے۔ کس نے ہسپتال والوں کو یہ نسخہ بتا دیا ہے کہ اگر بیڈ کی قلت ہو تو مردوں کے ساتھ زندوں کو لٹا دیا جائے۔ کیا اس طرح بنا کسی علاج کے یہ ہسپتال والے زندہ مریض کو صحت یاب اور مردے کو زندہ کرنے کا معجزہ دکھانا چاہے ہیں۔ جس طرح کئی معجزاتی تقاریب کے نام پر ایسا ہی ڈھونگ رچایا جاتا ہے کہ مردہ زندہ ہو گیا‘ اندھا دیکھنے لگا‘ گونگا بولنے لگا‘ لنگڑا چلنے لگا۔ اور یہ ڈھونگ بڑے بڑے اشتہارات کے ساتھ لگایا نظر بھی آتا ہے۔

سب جانتے ہیں کہ سب ڈھونگ ہے مگر پھر بھی سادہ لوح ناخواندہ لوگوں کی وہاں معجزات کے نام پر اچھی خاصی بھیڑ جمع ہو جاتی ہے۔ اب جس طرح ہمارے ہسپتالوں میں یکے بعد دیگرے ایسے واقعات سامنے آ رہے ہیں ان سے لگتا ہے کہ حکومت کی طرف سے نوٹس لینے کے باوجود ہسپتال والوں پر کوئی اثر نہیں پڑا وہ اسی طرح اپنی مرضی کے مطابق ہسپتالوں کو اپنی جاگیر سمجھتے ہوئے جو چاہے کریں انہیں کوئی خوف نہیں کوئی پوچھنے والا نہیں۔ یہ دوسرا واقعہ ہے کہ مردے کے ساتھ زندہ مریض کو لٹایا گیا۔ کیا یہ رویہ دنیا میں کہیں اور کبھی دیکھنے میں آیا ہے۔ اسی ہسپتال میں ایک معمر مریض کو فرش پر لٹایا ہوا ہے۔ کیا اس بدانتظامی کا جواب ہے کسی کے پاس…

متعلقہ خبریں