آصف زرداری کیلئے خصوصی جوتا تیار نام پیپلز چپل رکھ دیا گیا

2017 ,مئی 20



لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک):ہمارے سیاستدان اور سیاسی روایات بھی عجیب ہیں۔ بھٹو کے دور میں چینی سٹائل کا لباس حکمرانوں کا من بھاتا تھا۔ ضیا دور میں شیروانی آ گئی۔ پھر اس کے بعد بے نظیر کا دوپٹہ چل پڑا بعد ازاں کوئی خاص لباس نہیں تھا شہباز شریف بھی چینی سوٹ میں اکثر نظر آتے ہیں اسی طرح بگٹی چپل بھی مشہور عام ہے۔ مگر حال ہی میں عمران خان کی پشاوری چپل کو بھی عوامی پذیرائی ملی اور نوجوان دھڑا دھڑ ایسی چپل پہننے لگے۔ اب پیپلز پارٹی والوں کے اپنے قائد کیلئے ایک خصوصی چپل ڈیزائن کی ہے جو پشاور میں بن رہی ہے جس کا نام بھی پیپلز چپل تجویز کر لیا گیا ہے۔ خدا جانے یہ سیاسی قائدین کیلئے چپل بنانے کا شوق کیوں عوام کو چر ایا ہے۔ کیا عوام نہیں جانتے کہ سیاستدان اور حکمران پہلے ہی عوام کو پائوں کی جوتی سمجھتے ہیں اور ان کے جائز مطالبات کو بھی جوتے کی نوک پر رکھتے ہیں۔ اسکے باوجود وہ انہی کیلئے جوتے تیار کرتے ہیں۔ ویسے جوتوں کے ہار بھی کافی شہرت رکھتے ہیں۔ کئی مقامات پر چوروں اور ڈاکوئوں کو پکڑنے کے بعد یہ ہار ان کو پہنائے جاتے ہیں۔ اس طرح کئی عالمی سطح کے رہنمائوں سمیت علاقائی رہنمائوں کو بھی جوتے کا نشانہ بنانے کے واقعات عام ہو چکے ہیں۔ اب یہ پیپلز پارٹی والوں کی محبت ہے کہ وہ لیڈروں کی طرف سے کچھ نہ کرنے کے باوجود بھی جوتے بنا کر دے رہے ہیں۔ حالانکہ انہی کی وجہ سے یہ لوگ خود ابھی تک ننگے پائوں پھرتے ہیں۔ اب یہ بھی معلوم نہیں کہ غیر ملکی مہنگے برانڈ والے جوتے پہننے والوں کو یہ دیسی قسم کے جوتے پسند بھی آتے ہیں یا نہیں۔

متعلقہ خبریں