اسامہ بن لادن کے زندہ ہونے کے دستاویزی ثبوت میرے پاس ہیں: ایڈورڈ سنوڈن

2017 ,مئی 23



لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک): زندہ ہاتھی لاکھ کا مرا سوا لاکھ کا تو بہت سنا ہے اب یہی حال اسامہ بن لادن کا بھی ہو رہا ہے۔ بعداز مرگ بھی انہیں سکون لینے نہیں دیا جا رہا۔ ان کی زندگی میں بھی ان کی قیمت اربوں ڈالر میں تھی۔ دوستوں کے ہاتھ بھی اور دشمنوں کی طرف سے بھی۔ پھر ایک رات ایبٹ آباد میں آپریشن ہوا امریکی ہیلی کاپٹر آسمان سے نازل ہوئے جن میں موت کا فرشتہ بھی بیٹھا تھا۔ نہایت خاموشی سے اس آپریشن میں چند منٹوں میں اسامہ بن لادن کو ہلاک کرکے آپریشن مکمل کر لیا گیا۔ لادن کی نعش امریکی فوجی ساتھ لے گئے۔ یوں جس شخص کی گرفتاری کے لئے پورا افغانستان چھلنی کیا گیا اربوں ڈالر خرچ ہوئے اس کا قصہ تمام ہوا۔ مگر اب یہ امریکی خفیہ ایجنسی کے ایک سابق اہلکار ایڈورڈ سنوڈن نے شوشہ چھوڑا ہے کہ اس کے پاس دستاویزی ثبوت موجود ہیں کہ اسامہ بن لادن زندہ ہے۔ کیونکہ وہ امریکی سی آئی اے کا پے رول ایجنٹ تھا۔ اور آج بھی انہی کی بدولت کربین جزائر میں عیش کی زندگی بسر کر رہا ہے۔ اب سچ کیا ہے اور جھوٹ کیا ہے اس بات کے حقائق تک کون پہنچے مگر بہتر یہی ہے کہ اگر اسامہ بن لادن مر چکے ہیں تو انہیں اب آرام کرنے دیا جائے بلاوجہ ان کے بارے میں اوٹ پٹانگ کہانیاں سنا کر ان کی روح کو پریشان نہ کیا جائے۔ اگر وہ زندہ ہیں تو پھر ان سے یہ پوچھا جائے کہ قبلہ جب آپ تھے ہی امریکی ایجنٹ تو پھر یہ افغانستان کو بمبارستان کیوں بنا دیا۔ بے گناہ اتنے مسلمانوں کا خون آپ کے سر ہے۔ ان کو مجاہد اسلام بنانے والے اب کیا کہیں گے۔ کیا اب مجاہد اسلام کا خطاب ان سے واپس چھینا جائے گا یا رہنے دیا جائے گا۔ صرف افغانستان ہی نہیں پاکستان بھی آج اس کی لگائی آگ میں جل رہا ہے جو ہمارے دشمنوں نے مل کر بھڑکائی اور ہم خواہ مخواہ اس کا ایندھن بن گئے۔

متعلقہ خبریں