عمران خان نتھیا گلی سے اتر آئے۔ وزیراعظم چھٹیاں گزارنے مری پہنچ گئے۔

2017 ,جولائی 4



لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک): تحریک انصاف کے قائد عمران خان لگی بندھی زندگی بسر کرتے ہیں۔ گھر اور گھر والوں کے بوجھ سے آزاد ہیں۔ بنی گالہ کی وسیع العریض جنت میں شاید تنہائی ستاتی ہو گی یا پھر وہاں ہر ایک کا آنا جانا لگا رہتا ہے جس سے خان صاحب چڑ جاتے ہیں۔ بنی گالہ بھی کون سا پنڈی اور اسلام آباد سے دور ہے وہاں بھی گرم موسم ہوتا ہے۔ ان سب باتوں سے اکتا کر خان صاحب نے سارا رمضان نتھیا گلی کے پرفضا مقام پر

یہ موسم یہ مست نظارے

پیار کرو تو ان سے کرو

گنگناتے ہوئے گزارا۔ سیاست کو بھی صرف تحریک میں نئے آنے والوں کو خوش آمدید کہنے تک محدود رکھا یا کبھی کبھار ذائقہ بدلنے کیلئے اجلاس بلا لیا۔ اب عید کے بعد خان صاحب پہاڑوں سے اترے ہیں تو سیدھے سیاسی میدان جنگ میں پہنچ کر توپوں کے دہانے کھول دیئے۔ دوسری طرف وزیراعظم میاں نوازشریف لندن سے وطن واپس آتے ہی چھٹیاں منانے مری پہنچ گئے ہیں۔ خدا جانے یہ کون سی چھٹیاں ہیں جو ختم ہونے کا نام نہیں لیتیں۔ انہیں تو لگتا ہے کبھی عمرہ اور کبھی لندن جانے کا شوق سمایا رہتا ہے۔ ملک میں ہوں تو مری چلے جاتے ہیں۔ ملکہ کوہسار مری کی پہاڑیوں میں ایسا کون سا جادو ہے کہ اپوزیشن ہویا حکومت کے نمائندے سب چھٹیاں گزارنے موسم کا لطف اٹھانے ہمیشہ یہاں کا چکر لگاتے ہیں۔ مگر یہ دونوں رہنما جو اس وقت عوام کے چہیتے لیڈر ہونے کا دعویٰ کرتے ہیں یعنی عمران خان اور میاں نوازشریف انہیں دنیا بھر میں گھومنے‘ مری اور نتھیا گلی جانے کیلئے وقت تو مل جاتا ہے اگر وقت نہیں ملتا تو صرف پارلیمنٹ میں جانے کیلئے نہیں ملتا۔

متعلقہ خبریں