ذہن کو فریش کرنے کیلئے ضروری کام

2016 ,دسمبر 12



 

اوٹاوا (شفق ڈیسک) لوگ عموماً فلم دیکھنے کیلئے سنیما گھر جانے سے پہلے منصوبہ بندی کرتے ہیں اور اس کیلئے ایک دن مختص کرتے ہیں۔ دفاتر میں کافی بریک کا وقت بھی معین ہوتا ہے۔ دوستوں سے ملاقات اور تفریح طبع کے دیگر مواقع بھی منصوبہ بندی سے طے کئے جاتے ہیں، تاہم اب ماہرین نے نئی تحقیق میں انکشاف کیا ہے کہ تفریح طبع کے مواقع کو اگر منصوبہ بندی سے متعین کر لیا جائے تو انکا مزہ کم ہو جاتا ہے کیونکہ تفریح طبع کی بجائے ایک کام کی حیثیت اختیار کر لیتے ہیں۔ اسکی بجائے اگر یہ کام بغیر منصوبہ بندی کے اچانک ہوں تو انکا مزہ دوبالا ہوتا ہے۔ رپورٹ کے مطابق کینیڈا کی اوہائیو سٹیٹ یونیورسٹی کے ماہرین نے اس حوالے سے قبل ازیں کی جانے والے 13تحقیقات کے نتائج کا تجزیہ کرکے یہ رپورٹ مرتب کی ہے۔ ان میں سے ایک تحقیق میں سائنسدانوں نے شرکاء کے دو گروپوں کو یوٹیوب پر اپنی پسند کی ویڈیوز منتخب کرنے کو کہا۔ ان کے انتخاب کرنے کے بعد ایک گروپ کو فوری طور پر یہ ویڈیو دیکھنے کی اجازت دے دی جبکہ دوسرے گروپ کیلئے ایک تاریخ اور وقت مخصوص کر دیا۔ یہ تاریخ ان کے کیلینڈر پر نمایاں کر دی گئی۔ ویڈیو دیکھنے کے بعد ان دونوں گروپوں کے افراد کے ذہنوں کے ٹیسٹ کئے گئے اور انہیں ویڈیوز دیکھنے سے حاصل ہونے والے لطف کا موازنہ کیا گیا تو معلوم ہوا کہ جن لوگوں نے بعد میں ویڈیو دیکھی تھی انہیں دوسرے گروپ کی نسبت انتہائی کم لطف آیا۔ تحقیقاتی ٹیم کی سربراہ پروفیسر سیلین میلکوک کا کہنا تھا کہ ہم اپنے تفریح طبع کے کاموں کیلئے جتنے طویل عرصے کی منصوبہ بندی کرتے ہیں اس کا مزہ اتنا ہی کم ہوتا جاتا ہے۔ اتفاقی یا فوری طور پر کوئی ویڈیو دیکھنے سے اس قدر لطف آتا ہے کہ وقت گزرنے کا احساس تک نہیں رہتا لیکن اگر وہی ویڈیو آٹھ، دس دن بعد دیکھنے کی منصوبہ بندی کرلیں تو پھر اس میں وہ لطف نہیں رہتا۔

متعلقہ خبریں