عمران کے ساتھ اقتدار کے لالچی ہیں۔ لوٹے اکٹھے کرنے سے تبدیلی نہیں آتی: یوسف گیلانی

2017 ,جون 5



لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک): ابھی پیپلز پارٹی سے تحریک انصاف کی طرف ہجرت کرنے والے پرندوں کی پرواز کا موسم شروع ہو چکا ہے۔ اسلئے پارٹی کے بڑوں کو تشویش لاحق ہونا قدرتی امر ہے۔ گیلانی صاحب بخوبی جانتے ہوں گے کہ خان صاحب ابھی پیپلز پارٹی کی مزید وکٹیں گرانے کے لئے پرعزم ہیں۔ اور شاید جلد ہی مزید کئی پیپلز پارٹی کے پرندے اڑ کر پی ٹی آئی کی شاخوں پر بسیرا کرنے کے لئے پرواز کریں۔ اس سے پہلے کہ دیر ہو جائے پارٹی کے بڑوں کو چاہئے کہ وہ ہوش میں آئیں اور اپنی وکٹیں بچائیں۔ورنہ خطرہ ہے کپتان اگر میچ کھیلنے کیلئے سندھ میں داخل ہو گیا تو وہاں بھی بہت سی کمزور وکٹیں وہ نہایت آسانی کے ساتھ گرا سکتا ہے۔جس کا بعد میں پیپلز پارٹی والوں کو دکھ ہو گا۔

جب ایک قومی پارٹی اپنی ساری سیاست صوبہ سندھ تک محدود کر لے گی تو باقی صوبوں کے رہنما خود بخود اپنے فیصلے کرنے میں آزاد ہوں گے کیونکہ ان کے پاس تو کسی کو دینے کے لئے کچھ بھی نہیں ہے۔ جو کچھ ہے وہ زرداری صاحب یا صوبہ سندھ والوں کے پاس ہے جو وہ کسی اور کے ساتھ شیئر کرنے کو تیار نہیں۔ خود پنجاب میں جو کبھی پی پی کا قلعہ تھا سوائے بلاول ہا¶س کے کچھ بچا نظر نہیں آتا۔ رہی بات لوٹوں کی تو ان پاکباز لوٹوں میں پی پی پی اور مسلم لیگ دونوں کے لوٹے شامل ہیں۔ سچ کہیں تو لوٹوں کا جمعہ بازار لگا ہے۔ لگتا ہے خان صاحب کو بھی لوٹے جمع کرنے میں مزہ آ رہا ہے....

متعلقہ خبریں