پانچ تن پاک

2019 ,نومبر 14



حضور شیخ سید عبدالقادر جیلانی اس حدیث کے اسناد کو ابوہریرہ تک پہنچاتے ہیں کہ انہوں نے رسول پاک ﷺ کوفرماتے سنا جب حق تعالی نےحضرت ابولبشر کو پیدا کیا اور اس کے جسم میں روح پھونکی جناب آدم علیہ السلام نے عرش کے داھنی بازو کی طرف نظر کی تو دیکھا کہ پانچ تن پاک کے جسموں کا نور رکوع اور سجود کررہا ہے

آدمؑ نے عرض کیا اے پروردگار کیا تونے کسی کو مجھ سے پہلے مٹی سے پیدا کیا ہے ۔۔۔۔ رب العزت نے فرمایا نہیں۔

 آدم نے عرض کی پس یہ کون اشخاص ہیں جن کو میں اپنی ھیت اور صورت میں دیکھ رہا ھوں اللہ تعا لیٰ نے فرمایا یہ تیری اولاد میں سے پانچ اشخاص ہیں اور جس چیز سے میں نے تجھے پیدا کیا یہ اس سے نہیں ہیں ان کے لئے میں نے اپنے سے پانچ نام مشتق کیے ہیں اگر یہ نہ ہوتے تو میں جنت و دودخ ، عرش ، کرسی ، آسمان، زمین ، فرشتے ، انسان اور جن وغیرہ اور اشیاء کو نہ پیدا کرتا ۔۔۔۔۔

پس میں محمود ہوں اور یہ محمد ہے اور میں عالی ہو اور یہ علی ہے میں فاطر ہوں اور یہ فاطمہ ہے میں احسان ہوں اور یہ حسن ہے میں محسن ہوں اور یہ حسین ہے ۔ مجھے اپنی عزت کی قسم ہے اگر کوئی ایک خردل کے دانہ کے برابر بھی ان کا بغض لے کر میرے پاس آئے گا تو میں اس شخص کو ضرور دودخ میں دھکیلوں گا اور مجھے اس کی کوئی پرواہ نہیں۔

ارحج المطالب ص690

متعلقہ خبریں