پت میرے پت نوں سمجھاویں

2019 ,اکتوبر 5



شاہ کوٹ پولیس کمیونٹی پولیسنگ کے تحت معمر خاتون بھاگ بھر کو گاڑی میں بٹھا کر ان کے گھر چھوڑ کر آئی۔ خاتون کو ان کے سگے بیٹے نے گھر سے نکال دیا تھا۔ راستے میں معمر خاتون ایس ایچ او سید حسن عمران کو کہتی رہیں۔”پت میرے پت نوں سمجھاویں کہ ہن مارے ناں“

یہ ہے ہمارے معاشرے کی تلخ حقیقت۔۔۔ ماں باپ کو اولڈ ہاؤس بھیجا جا رہا ہے۔۔۔۔ یا پھر سڑکوں پر دھکے کھانے کے لیے چھوڑ دیا جاتا ہے۔۔۔ اور تو اور وہ ماں باپ جو اپنی ساری زندگی بچوں کی پرورش کرنے میں گزار  دیتے ہیں۔۔۔۔ وہی بچے ان پر ہاتھ اٹھانے لگے ہیں۔۔۔ کیوں۔۔۔ کیا ماں باپ بوجھ بنتے جا رہے ہیں۔۔۔۔؟؟ خدارا قدر کرو ان کی۔۔۔ یہ وہ ہستیاں ہیں جو ایک بار بچھڑ گئیں تو پھر کبھی نہیں ملتیں۔۔۔۔ جن کے والدین نہیں ہیں کبھی ان کے پوچھو زندگی کی دھوپ میں وہ کیسے بنا سائے اور سائبان کے چلتے ہیں۔۔۔۔ ماں باپ قیمتی سرمایہ ہیں۔۔۔۔ خدمت کر لو ابھی وقت ہے۔۔۔۔ ورنہ پچھتاوے کے علاوہ کچھ ہاتھ نہیں آنا۔

متعلقہ خبریں