تصویر بولتی ہے

2017 ,اگست 29



لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک):ایبٹ آباد کا اخترعلی آئوٹ فال روڈ کے قریب واقع تنویر بنانے والی ایک ورکشاپ میں بطور کاریگر کام کرتا ہے۔ اس کا کہنا تھا کہ گھریلو حالات کی وجہ سے سکول کی تعلیم حاصل نہیں ہو سکی۔ مختلف محنت مزدوری کرتے کرتے اس کام کو وسیلہ روزگار بنا لیا، ایک مکمل تنور کی تیاری میںتین دن لگ جاتے ہیں بطور کاریگر ہمیں دیہاڑی پر کامکرنا ہوتا ہے چونکہ یہاس کام کی ورکشاپ ہے مسلسل کام ہونے کی وجہ سے میہنے بعد معقول پیسے مل جاتے ہیں۔ تین بچے ہیں جو اپنے آبائی علاقے میں ہی زیر تعلیم ہیں۔ بیٹے کو اچھی تعلیم دلوانے کے ساتھ ساتھ ٹیکنیکل کام بھی ضرور سیکھائوں گا تعلیم کے ساتھ ساتھ اگر کوئی ٹیکنیکل کام بھی آتا ہو تو زندگی بہتر ہو جاتی ہے۔

متعلقہ خبریں