پولیس کی حراست میں ہلاک ہونے والے غریب ہی کیوں؟؟؟

2019 ,ستمبر 8



لاہور(شفق رپورٹ): کئی مہینوں سے پولیس کی حراست میں ہلاک ہونے والوں کی خبریں گردش کر رہی ہیں ۔۔ اور گزرتے وقت کے ساتھ ساتھ اس تعداد میں مزید اضافہ ہوتا نظر آ رہا ہے۔۔۔ پہلے امجد اور پھر صلاح الدین کی ہلاکت نے عوام کو سخت مشکل میں ڈال دیا ہے۔ دیکھنے میں آ رہا ہے کہ پولیس سمیت عوام نے مجرموں کا انجام اپنے ہاتھوں میں لے لیا ہے اور عدالت کو ہر طرح سے بری ازماں کر دیا ہے کیونکہ آج کل کسی بھی مجرم کا فیصلہ عدالت میں نہیں جاتا بلکہ اس سے پہلے ہی اس کی زندگی کا فیصلہ سنا دیا جاتا ہے۔۔ سوچنے والی بات یہ ہے کہ پولیس کے ہاتھوں جو ہلاکتے ہوتی ہیں وہ غریب ہی کیوں ہوتے ہیں؟؟؟ ابھی تک نواز شریف اور زرداری کیوں نہیں ہلاک ہوئے وہ بھی تو پولیس کی حراست میں ہیں۔۔۔ وہ کیوں عدالت کے فیصلے کے منتظر ہیں۔۔ کیا اس کی وجہ یہ ہے کہ وہ بڑے لوگ ہیں پیسے والے ہیں ۔۔ پولیس والوں کو ان سے امداد کی امید ہے جبکہ صلاح الدین کے گھر والوں نے پولیس والوں کو چائے کا کپ بھی نہیں پوچھا تھا اس لیے وہ مارا گیا۔۔۔ یہ ہمارے قائد کا ملک تو کہیں سے بھی نہیں لگتا۔۔۔ پھر پاکستان کی یہ حالت کیون ہے؟؟؟۔فیصلہ ٓپ خود کریں یہ قصہ پڑھ کے۔۔۔۔ 

 ایک کوا اور مینا ایک جگہ سے گزر رہے تھے کہ انہوں نے دیکھا کہ وہاں ایک بستی ویران اور اجاڑ پڑی ہے۔۔ کوا بولا یہاں الو کا بسیرا ہے اس لیے یہ علاقہ اجاڑ ہے۔۔۔ ایک الو پاس ہی ٹہنی پر بیٹھا تھا اس نے کوا کی بات سننے کے بعد انہیں رات اپنے ساتھ گزارنے کو کہا۔ کوے سے اُلو کی پیش کش قبول کر لی۔۔ صبح کوا اور مینا واپس جانے لگے تو اُلو نے کہا کہ مینا میری بیوی ہے اسے تم نہیں لے کر جا سکتے۔۔۔ کوا یہ بات سن کے پریشان ہو گیا اور اُلو کے کہنے پر بات عدالت تک جا پہنچی اور اکتفا اس بات پر ہوا کہ جو بھی فیصلہ آئے گا وہی قبول ہو گا۔۔۔ خیر عدالت میں مسئلہ پیش ہوا تو عدالت نے مینا کو الو کی بیوی قرار دے دیا۔۔۔ عدالت کا فیصلہ سن کر کوا روتا ہوا اکیلا واپس جانے لگا کہ الو نے ہنستے ہوئے کوے کو آواز دی کہ اپنی بیوی مینا کو تو لیتے جاؤ۔۔۔ کوے نے کہا لیکن عدالت نے تو فیصلہ تمہارے حق میں سنایا ہے۔۔۔ اس پر الو نے کہا میرا مقصد بس یہ بتانا تھا کہ بستیاں اُلو کی وجہ سے نہیں اجڑتیں بلکہ جہاں سے انصاف ختم ہو جائے وہاں اجڑتی ہیں۔۔۔۔

تو کیا آج جو پاکستان کی حالت ہے وہ ملک مین انصان نہ ہونے کی جہ سے ہے؟؟؟ ذرا غور کرکے فیصلہ کریں ۔۔۔ 

متعلقہ خبریں