ہال سیل‘ بینر‘ جھنڈے‘ پھاڑ ڈالے‘ تحریک انصاف کا سڑک پر جلسہ گو نواز گو کے نعرے

تحریر: فضل حسین اعوان

| شائع مارچ 13, 2017 | 07:12 صبح

لاہور (مانیٹرنگ) تحریک انصاف نے الزام عائد کیا ہے پنجاب حکومت نے ٹائون شپ میں واقع مارکی میں رہنمائوں اور کارکنوں کے اعزاز میں گزشتہ روز ورکرز کنونشن اور ناشتہ کی تقریب کو ریاستی جبر کے ذریعے ہال میں ہونے سے رکوا دیا، تقریب سے شاہ محمود قریشی نے بھی خطاب کرنا تھا، ہفتہ و اتوار کی درمیانی شب مارکی کو سربمہر کرکے یہاں سکیورٹی بٹھادی گئی جس کے بعد پی ٹی آئی کی قیادت نے شاہ محمود قریشی کو سکیورٹی وجوہات کی بناء پر آنے سے روک دیا۔ تفصیلات کے مطابق تحریک انصاف لاہور کے فنانس سیکرٹری نعیم الحق کی

طرف سے مرکزی اور صوبائی رہنمائوں سمیت پی ٹی آئی کے رہنمائوں اورکارکنوں کے اعزاز میں گزشتہ روز ناشتے کا اہتمام کیاگیا تھا لیکن صوبائی وزیر اوقاف سید ذعیم قادری کی ہدایت پر اس مارکی کو گذشتہ رات بلاوجہ سربمہر کرکے یہاںسکیورٹی بٹھادی گئی تاہم مرکزی رہنما حامد خان، لاہور کے صدر ولید اقبال، اپوزیشن لیڈر پنجاب اسمبلی محمود الرشید، ایم این اے شفقت محمود، اعجاز احمد چوہدری، شیخ امتیازمحمود،عاطف چوہدری، ایم پی اے سعدیہ سہیل رانا، محمد مدنی اور طاہر رشید چوہدری سمیت ہزاروں رہنما اور کارکن موقع پر پہنچ گئے تاہم وہاں پر موجود سکیورٹی اہلکاروں نے پی ٹی آئی کی تقریب نہ ہونے دی جس کے بعد حامد خان، ولید اقبال اور محمود الرشید سمیت تمام رہنمائوں نے سربمہرمارکی کے باہر ہی احتجاجی جلسہ شروع کردیا اور سڑک کنارے ہی قیادت سمیت کارکنوں نے حلوہ پوری، نان چنے اوردیگر لوازمات کیساتھ ناشتہ کیا اور حکومتی اقدامات کی بھرپور مذمت کی۔ حامد خان نے اپنے خطاب میں کہا پنجاب حکومت کا یہ اقدام سراسر غیر سیاسی اور جمہوری رویوں کے منافی ہے۔ جمہوریت کا لبادہ اوڑہ کر مسلم لیگ ن آمریت سے بھی بدتر سوچ اور عمل کا مظاہرہ کر رہی ہے۔ حکمران اپنے برے دن قریب آتے دیکھ کر حواس باختہ ہوگئے ہیں۔ ولید اقبال نے کہا ناشتے کی تقریب کو تہس نہس کردینا پنجاب حکومت کا شرمناک اقدام ہے، حکومت کو اپنے سوا ملک میں کوئی بھی پاکستانی برداشت نہیں، کبھی پختونوں پر پنجاب کی زمین تنگ کردی جاتی ہے تو کبھی تحریک انصاف کیخلاف انتقامی کارروائی کی جاتی ہے، انہوں نے کہا ’’آمرشریف‘‘ نے ’’زمین قادری‘‘ کے ذریعے تحریک انصاف کی تقریب کو خراب کیا جس کی ہم پرزور مذمت کرتے ہوئے اعلان کرتے ہیں حکومت نے رویہ نہ بدلا تو ہمیں بھی جواب دینا آتا ہے لیکن ہم شرافت کا پہلو چھوڑیں گے نہ ہی قانون کو ہاتھ میں لیں گے۔ محمود الرشید نے کہا پنجاب حکومت پانامہ کیس کے فیصلے کی وجہ سے حواس باختہ ہو چکی ہے لیکن چند روز بعد مسلم لیگ ن کی حکومت کا سورج غروب ہونیوالا ہے ، ن لیگی کرپٹ ہی نہیں بدمعاش بھی ہیں کبھی گلو بٹ سامنے آجاتا ہے تو کبھی جاوید لطیف کی شکل میں اسمبلی میں گلو بٹ نمودار ہوتا ہے۔ حکومت کی طرف سے تحریک انصاف کے ناشتے کی تقریب الٹادینے کے بعد مرکزی، صوبائی اور مقامی رہنمائوں کیساتھ وہاں سے گزرنے والے عام شہریوں اور فیملیوں نے بھی ناشتہ کیا اور ایک موقع پر یہ تقریب جلسے کی شکل اختیار کرگئی اور وقفے وقفے سے گو نواز گو کے نعرے لگائے جاتے رہے۔ مزید براں اپنے ردعمل میں محمود الرشید نے کہا خود کو جاتا دیکھ کر پھٹیچر لیگ اور اسکے پھٹیچر وزرا اوچھے ہتھکنڈوں پر اتر آئے ہیں، جیسے جیسے پانامہ کا فیصلہ قریب آ رہا ہے ویسے ویسے حکمرانوں کی فرسٹریشن بڑھتی جا رہی ہے۔ انہوں نے کہا قوم ان جعلی خادموں وزیروں کے اصل چہرے دیکھ چکی ہے، جلد سارے دو نمبر حکمران جیلوں میں ہونگے، پنجاب اسمبلی میں سپیکر کے رویئے کیخلاف آج بھی احتجاج کریں گے اور سیڑھیوں پر اسمبلی لگائیں گے۔ ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ ملکی قرضوں کا حجم 23 ہزار ارب روپے سے تجاوز کر گیا، ملکی و غیر ملکی قرضوں کے بعد ہر پاکستانی ایک لاکھ 15ہزار روپے کا مقروض ہو گیا، حکومت میں آکر حکمرانوں سے ہضم کردہ قرضوں کا حساب لیں گے۔ تحریک انصاف سینئر مرکزی رہنما اعجاز احمد چوہدری نے اپنے بیان میں کہا ہے مسلم لیگ ن نے بدتمیزی کی تما م حدیں کراس کر لی ہیں، لاہور پی ٹی آئی کے ورکرز کنونشن کے موقع پر (ن) لیگ کی غنڈہ گردی اور بد معاشی کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے، یہ شریف برادران کی آمریت کی عکاسی کرتی ہے۔ انہوںنے کہا مسلم لیگ ن بوکھلاہٹ کا شکار ہو چکی ہے ، شریف برادران کا یو م حساب دن بہ دن قر یب آرہا ہے، انھیں منہ کی کھانا پڑے گی اور جیت عوام کی ہو گی، لاہور میں ہو نے والے ورکرز کنونشن کے پو سٹر اور بینرز پھاڑ دیئے گئے، پنجاب حکومت اور انتظامیہ نے ہال کی انتظامہ کو ہراساں کیا، درباریوں کے اوچھے ہتھکنڈے پی ٹی آئی کے کارکنوں کے حو صلے پست نہیں کر سکتے، لطیف، رانا ثناء اللہ، عابد شیر علی، طلال چوہدری، دانیال عزیز سمیت دیگر درباریوں کی غنڈہ گردی اور بدمعاشی پانامہ چور حکمرانوں کو نہیں بچا سکتی، شہباز شریف اور ان کے تنخواہ دار درباریوں نے صوبے بھر میں لوٹ مار کا بازار گرم کر رکھا ہے، جلسہ جلوس کرنا تحریک انصاف کا جمہوری حق ہے اس سے ہمیں کوئی نہیں روک سکتا۔ نوائے وقت نیوز/ آن لائن کے مطابق پی ٹی آئی کے رہنما شفقت محمود نے کہا ہے کہ ن لیگ اب پھٹیچر لیگ بنتی جا رہی ہے۔ تحریک انصاف کے ترجمان نعیم الحق نے اپنے ردعمل میں کہا آمریت کی نرسری میں پلنے والے جمہوریت تاراج کرنے میں لگے ہوئے ہیں مگر ہم اس قسم کے ہتھکنڈوں سے پہلے مرعوب ہوئے نہ اب ہوں گے۔ ادھر مسلم لیگ ن کے رہنما زعیم قادری نے کہا ہے کہ مسلم لیگ ن کے کسی کارکن نے پی ٹی آئی کارکنوں کا راستہ نہیں روکا‘ دراصل یہ لڑائی جہانگیر ترین اور شاہ محمود قریشی کے دو گروپوں کے درمیان ہوئی تھی جس کا ن لیگ سے کوئی تعلق نہیں نہ ہی ن لیگ کے کسی گروپ نے توڑ پھوڑ کی ہے۔