اکیاسی جسم فروش عورتوں کے قاتل نے اعتراف کرلیا

2017 ,جنوری 12



       

      ماسکو (مانیٹرنگ) کسی انسان کے بدن سے ٹپکتے لہو کا تصور کر کے ہی رونگٹے کھڑے ہو جاتے ہیں، مگر صد حیرت کہ اسی دنیا میں ایک ایسا درندہ پکڑا گیا ہے کہ جس نے ایک، دو نہیں بلکہ 81 خواتین کے ٹکڑے کر ڈالے۔ 

      ڈیلی میل کی رپورٹ کے مطابق اس بھیڑیا نما انسان کا نام میخائل پوپکو ف ہے، جس کے ہاتھوں 81 خواتین کے قتل کی تصدیق کے بعد اسے دنیا کی تاریخ کا تیسرا سب سے بڑا سیریل کلر قرار دیا جارہا ہے، جبکہ روس کی تاریخ میں وہ سب سے زیادہ قتل کرنے والا سیریل کلر بن گیا ہے۔ روسی پولیس کا کہنا ہے کہ پوپکوف پر 22 خواتین کو قتل کرنے کا الزام پہلے ہی ثابت ہو چکا تھا لیکن حال ہی میں اس نے 59 مزید خواتین کے قتل کا اعتراف کر لیا ہے۔
      سائبیریا کا درندہ کہلانے والا یہ شخص کبھی پولیس اہلکار ہوتا تھا اور لوگوں کی حفاظت اس کے ذمہ تھی۔ پھر ایک دن اس نے خود ہی ایک خوفناک درندے کا روپ دھار لیا اور نو عمر لڑکیوں کو اغوا کر کے قتل کرنے کا سلسلہ شروع کر دیا۔ اٹھارہ سال تک وہ حیوانیت کا کھیل کھیلتا رہا اور اس عرصے کے دوران درجنوں کم سن لڑکیوں اور خواتین کو عصمت دری کے بعد ہلاک کر دیا۔ وہ عموماً اپنا شکار بننے والی خواتین کی عصمت دری کے بعد کلہاڑی یا چھری سے ان کے جسم کے ٹکڑے کر دیا کرتا تھا۔
      پوپکوف نے عدالت کو بتایا کہ وہ سائبیریا کی سڑکوں کو جسم فروش خواتین سے پاک کرنا چاہتا تھا اور اسی لیے ان خواتین کو اغوا کر کے انہیں قتل کر دیتا تھا۔ اس نے بتایا کہ وہ عموماً رات کو پولیس کی گاڑی پر نکلتا اور جہاں کہیں کوئی جسم فروش خاتون نظر آتی اسے گاڑی میں بٹھا کر ویران علاقے میں لے جاتا۔ وہ اغواءکی گئی خواتین کی پہلے عصمت دری کرتا اور پھر کلہاڑی یا خنجر سے ان کے جسم کے ٹکڑے کر کے سڑک کنارے پھینک دیا کرتا تھا ۔جب 2012 ءمیں اسے گرفتار کیا گیا تو اس کا کہنا تھا کہ اگر جدید ڈی این اے ٹیکنالوجی کا استعمال نہ کیا جاتا تو وہ کبھی پکڑا نہ جاتا اور قتل کا سلسلہ اب تک جاری ہوتا۔
      اگر روسی عدالت کی جانب سے اسے 81 خواتین کے قتل کا مجرم قرار دیا جاتا ہے تو وہ تاریخ میں تیسرا بڑا سیریل کلر بن جائے گا۔ اس سے پہلے کولمبیا سے تعلق رکھنے والے شخص لوئی گراویتو پر 138 کم سن لڑکوں کا قتل ثابت ہوا جبکہ کولمبیا کے ہی پیڈرو لوپیز نے 300 لڑکیوں کی عصمت دری کر کے انہیں قتل کیا۔

      متعلقہ خبریں