پانچ لوگوں نے 25 سالہ نوجوان لڑکی کا گینگ ریپ کرنے کے بعد اس کے ساتھ ایسا خوفناک ترین کام کردیا کہ جان کر آپ کے بھی رونگٹے کھڑے ہوجائیں گے

2017 ,اگست 28



کیپ ٹاﺅن(مانیٹرنگ ڈیسک)انسان تو انسان، سفاک درندوں سے بھی ایسی بے رحمی کی توقع نہیں کی جا سکتی جس کا مظاہرہ جنوبی افریقہ کے ایک دور دراز گاﺅں کے قریب واقع جنگل میں نوجوان لڑکی کی اجتماعی عصمت دری کرنے والے پانچ بدمعاشوں نے کیا۔ 
ویب سائٹ ’ورلڈ وائرڈ ویئرڈ نیوز‘ کی رپورٹ کے مطابق کاوازولا نیٹل شہر کی پولیس کا کہنا ہے کہ بدقسمت لڑکی اپنی دادی کے گھر جارہی تھی کہ پانچ غنڈوں نے اسے اغوا کر لیا۔ وہ اسے قریبی جنگل میں لے گئے اور اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا، جس کے بعد اس کے جسم کے ٹکڑے کئے اور اس کا گوشت پکا کر کھاگئے۔

اس لرزہ خیز جرم کا انکشاف اس وقت ہوا جب لڑکی کا گوشت کھانے والوں میں سے ایک شخص خود پولیس کے پاس چلا گیا اور اپنے بھیانک جرم کا اعتراف کر لیا۔ اس کی دی گئی معلومات کی بناءپر باقی چار افراد کو بھی گرفتار کرلیاگیا۔ پولیس نے لڑکی کے جسم کے کچھ ٹکڑے قریبی جنگل سے برآمد کئے۔
مقامی میڈیا کے مطابق سفاکیت کی انتہاءکرنے والے ان درندوں کے نام نینو نباتھا، ستینبیسو، لنڈوکول، لنگوسیانی اور مگوبانی ہیں۔ ان کی درندگی کا نشانہ بننے والی لڑکی کی شناخت 25 سالہ زنیلی الاشوایو کے نام سے کی گئی ہے۔

متعلقہ خبریں