شادی کی تقریب میں دولہا نے اپنی 40سالہ دلہن کو ایک ایسے شخص سے ملوا دیا جو اس دنیا میں موجود نہیں تھا،ایسی تفصیلات سامنے آ گئیں کہ آپ کو بھی یقین نہیں آئے گا

2017 ,جولائی 14



الاسکا(مانیٹرنگ ڈیسک) شادی میں دوست و احباب کی جانب سے ملنے والے کچھ تحفے انسان کو کبھی بھی نہیں بھولتے ،خاص کر ان لوگوں کی طرف سے ملنے والے تحائف جو دل کے بہت قریب ہوتے ہیں، لیکن اگر شادی میں آپ کو کسی ایسے شخص کی جانب سے تحفہ ملے جو اس وقت دنیا میں ہی موجود نہ ہوتو یقیناًآپ کی آنکھیں نم ہو جاتی ہیں ،ایسا ہی ایک محبت سے بھرپور انوکھا واقعہ امریکی ریاست الاسکا میں پیش آیا جہاں دولہے نے اپنی ہونے والی دلہن کو اس کے 2سال قبل مرنے والے بیٹے سے’’ ملاقات‘‘ کر اکے تقریب میں موجود ہر شخص کو حیران کردیا ۔

برطانوی خبر رساں ادارے کے مطابق بیکی ٹرنی نامی 40سالہ خاتون کا ایک ہی بیٹا’’ ٹرسٹن ‘‘ تھا جو 19سال کی عمر میں2سال قبل انتقال کر گیا تھا،اس کے مرنے کے بعد بیکی نے اپنے بیٹے کا دل اور دیگر جسمانی اعضا عطیہ کر دیئے تھے،ٹرسٹن کا دل جیکب کلبی نامی ایک نوجوان کو لگایا گیا ۔ٹرسٹن کی موت کے بعد 40سالہ بیکی ٹرنی ایک نوجوان کیلی کی محبت میں گرفتار ہو گئی اور دونوں نے ٹرسٹن کی موت کے 2سال بعد شادی کا فیصلہ کیا ،شادی کے روز بیکی کے منگیتر نے اپنی دلہن کو ایسا’’ خاص تحفہ‘‘ دینے کا فیصلہ کیا کہ بیکی سمیت شادی کی تقریب میں موجود ہر شخص حیران رہ گیا ،کیلی نے شادی کے روز ایک ایسے شخص کو بھی تقریب میں کسی کو بتائے بغیر خاموشی سے مدعو کیا ہوا تھا جس کے سینے میں دلہن کے آنجہانی نوجو ان بیٹے کا دل دھڑک رہا تھا ،بیکی ایسے نوجوان جس کے سینے میں اس کے بیٹے کا دل دھڑک رہا تھا اچانک دیکھ کر انتہائی جذباتی ہو گئی ۔

اس موقع پر دولہے کیلی نے شادی کی تقریب میں سٹیتھوسکوپ(دل کی دھڑکن سننے والا آلہ)کا بھی انتظام کر رکھا تھا ،جسے بیکی جیکب کلبی کے سینے سے لگا کر اپنے مردہ بیٹے کے ’’زندہ دل ‘‘ کی دھڑکن سنتی رہی ،اس موقع پر کئی جذباتی مناظر بھی دیکھنے میں آئے ،بیکی کا کہنا تھا کہ میرا بیٹا تو مر چکا ہے مگر خوشی کی اس تقریب میں اس کا ’’زندہ دل ‘‘ موجود ہے ،شادی کے موقعے پر ایک کرسی آنجہانی ٹرسٹن کے لیے بھی مختص کی گئی تھی جس پر اس کی طرف سے اپنی ماں کے نام ایک پیغام لکھا ہوا تھا کہ آپ کی شادی کے موقع پر میں دوسرے جہان میں ہوں جہاں میں آپ کی کیا خدمت کر سکتا ہوں؟ میں زمین پر آؤں گا یہ وقت آپ کے ساتھ گزارنے کے لیے، لہٰذا میرے لیے ایک نشست رکھیے گا، صرف ایک خالی کرسی، آپ شاید مجھے نہ دیکھ سکیں لیکن میں وہاں موجود ہوں گا۔ دلوں کو چھو لینے والے ان مناظر کو’’ لو ایڈوینچر فوٹوگرافک سروس‘‘ نے محفوظ کیا تو شادی  کی یہ تصاویر سوشل میڈیا پر وائرل ہو گئیں اور ان لوگوں کو بھی جذباتی کر دیا جن کے پیاروں نے مرنے کے بعد اپنے جسمانی اعضا عطیہ کر دیئے تھے ۔جیکب کلبی نے ’’بی بی سی‘‘ سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ یہ تجربہ انتہائی غیرحقیقی، دل کو چھو لینے والا اور بہت ہی جذبات انگیز تھا۔

متعلقہ خبریں