شاہ محمود قریشی نے مودی کو کھلا چینلج کردیا۔۔۔ تفصیلات جانئے اس خبر میں

2019 ,ستمبر 13



 مظفرآباد (مانیٹرنگ رپورٹ )مظفرآباد میں جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر نے کشمیر کے عوام سے اظہارِ یکجہتی کرنے پر پاکستان کے عوام اور حکومت کا شکریہ ادا کیا.انہوں نے کہا کہ کشمیریوں کی جدوجہد آزادی تک جاری رہے گی، ماہ محرم بھی ہمیں ظلم کے آگے سر نہ جھکانے کا سبق دیتا ہے بھارت کل آپ کو دو طرفہ مذاکرات کی جو پیشکش کرے گا اس کے جال میں نہ پھنسیں کیونکہ دو طرفہ مذاکرات کے باعث کشمیریوں کی خصوصی حیثیت کو بحال کرنے کا مسئلہ نظرانداز ہوجاتا ہے. 

جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ آج عمران خان بیرونی دنیا کو تقابلی جائزہ پیش کرنے کے لیے مظفر آباد آئے ہیں‘ انہوں نے کہا کہ دنیا دیکھ سکتی ہے کہ آج آزاد کشمیر کے دارالحکومت مظفر آباد میں کھلے آسمان تلے کشمیریوں سے پاکستان کا وزیراعظم مخاطب ہے. شاہ محمود قریشی نے کہا کہ میں چیلنج کرکے پوچھنا چاہتا ہوں کہ مودی کیا تم مقبوضہ کشمیر کے دارالحکومت میں کشمیریوں سے خطاب کرسکتے ہو؟ اگر جرات ہے، ہمت ہے اور سمجھتے ہو کہ کشمیر کے لوگوں کے لیے کوئی کارنامہ کیا ہے تو مودی کرفیو اٹھاو اور تماشہ دیکھو. انہوں نے کہا کہ کیا آزاد کشمیر میں کوئی سیاسی قیدی نہیں ہے، مودی تم نے کس قانون کے تحت 4 ہزار کشمیریوں کو کیوں قید کیا ہے؟ انہیں آزادی سے اپنا موقف کیوں پیش کرنے نہیں دیا جارہا؟ وزیر خارجہ نے کہا کہ دنیا سوال کررہی ہے کہ کیا وجہ ہے کہ آزاد کشمیر میں ٹی وی دیکھا جارہا ہے، اخبارات چھپ رہے ہیں، مقبوضہ کشمیر میں اخبارات تک رسائی نہیں ہے، آزاد کشمیر میں انٹرنیٹ اور موبائل سروس ہے لیکن مقبوضہ کشمیر میں سروس کیوں بند ہے.

بعدازاں وزیراعظم نے قوم سے خطاب میں کشمیری عوام سے اظہار یکجہتی کے لیے کشمیر آور منانے کا اعلان کیا تھا اور 30 اگست کو ملک بھر میں مقبوضہ وادی کے مظلوم کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے لیے عوام دن 12 سے 12.30 بجے تک باہر نکلے تھے۔

متعلقہ خبریں