طیارے سے اتارنے پر معافی مانگنے تک امریکیوں سے ملاقات نہیں ہو سکتی:شیخ رشید

2017 ,جون 6



لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک):چہ پدی چہ پدی کا شوربا۔ یہ شیخ رشید کو اچانک امریکیوں کی بدسلوکی والی بھولی بسری داستان کیسے یاد آ گئی اور یہ ان سے کن امریکیوں نے ملاقات کی خواہش کا اظہار کیا ہے۔ بات صرف اتنی ہے کہ کسی تقریب میں شیخ جی کو کسی امریکی نے ہائے ہیلو کہہ دیا تو شیخ صاحب کو شیخ چلی والے خواب آنا شروع ہو گئے وہ بھی کھلی آنکھوں سے دیکھنے لگے کہ یہ امریکی مجھ سے ملاقات کے خواہشمند ہیں، جھٹ انہوں نے اسی عالم غنودگی میں ہی خود کلامی کرتے ہوئے کہہ دیا کہ جب تک امریکہ والے مجھ سے طیارے سے اتارنے کی معافی نہیں مانگتے میری آپ لوگوں سے کٹی رہے ۔گی میں آپ لوگوں سے نہیں ملوں گا۔ اب ایسے شیخ چلی والے جاگتی آنکھوں کے ساتھ دیکھے گئے خوابوں پر کوئی پابندی تو لگا نہیں سکتا۔ امریکہ والوں کو فی الحال ہنوز شیخ جی جیسے مُہروں کی دور تک کوئی ضرورت نہیں ہے اس لئے وہ امریکیوں کی طرف سے معذرت کا تو تصور بھی نہ کریں۔ ایسے سعد لمحات ہم پاکستانیوں کی تقدیر میں کم ہی آتے۔ ہاں البتہ ڈومور کے الفاظ ہمیں اکثر سننے کو ملتے ہیں کیونکہ وہ جانتے ہیں کہ ہم ان کے ہر حکم پر سر تسلیم خم کرنے کے عادی ہو چکے ہیں۔ اب اس قسم کے بیان کے بعد تو شیخ رشید اور امریکہ کے درمیان تعلقات مزید کشیدہ ہو سکتے ہیں۔ اس لئے شیخ جی کسی ممکنہ ڈرون حملے سے محفوظ رہنے کی تیاری مکمل رکھیں۔

متعلقہ خبریں