سبق کیوں یاد نہ کیا۔۔۔۔استاد نے شاگرد کو جان سے مار دیا

2019 ,ستمبر 9



لاہور(شفق رپورٹ): ٹیچر کا بیہمانہ تشدد دسویں جماعت کے طالب علم کی جان لے گیا۔ امریکن لائسٹف سکول گلشن راوی لاہور کے ٹیچر نے سبق نہ یاد کرنے پر دسویں جماعت کے طالب علم حافظ حنین پر اس قدر تشدد کیا کہ بچہ جان کی بازی ہار گیا۔ پولیس نے موقع پر پہنچ کر ٹیچر جس کا نام کامران تھا کو حراست میں لے لیا۔ اس بات کی گواہی باقی طالبات نے بھی دی ہے کہ ٹیچر کامران نے حنین پر لاتوں اور گھونسوں سے تشدد کیا۔ اور ساتھ ہی طالبات نے یہ بھی بتایا کہ حافظ حنین کا سر دیوار میں بھی مارا گیا۔ جبکہ حنین کہتا رہا سر میرا سانس بند ہو رہا ہے۔ دھائی دیتا رہا لیکن ظالم استاد کو ترس نہ آیا۔ حافظ حنین کو حالت غیر ہونے پر اسپتال منتقل کیا گیا لیکن وہ جانبر نہ ہو سکا ۔ اور اپستال میں ہی دم توڑ گیا۔۔۔ حنین پر تشدد کے دوران اچانک سکول کے ہیڈ کلاس میں آئے تو کامران ٹیچر نے بچے کو چھوڑ دیا تب تک اس کی حالت غیر ہو چکی تھی 15 منٹ تک حنین ہوش مین رہا لیکن کسی نے اس کی مدد نہیں کی نہ ہی کو ٹریٹمنٹ دیا۔۔۔ جب وہ بے ہوش ہو گیا تو ریاضی کے استاد کے کہنے پر حنین کو ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں وہ اپنی زندگی کی بازی ہار گیا۔ حنین کے گھر والوں کی پولیس میں درخواست دائر کروانے پر پولیس نے فوری ایکشن لیا اور ٹیچر کامران کو حراست میں لے لیا گیا۔۔۔۔

متعلقہ خبریں