"اک یہودی کی باتیں "

2019 ,ستمبر 22



جن کے سر پر ڈوپٹہ ہونا چاہئے وہ ننگے سر کھڑی ہیں۔
میں یہودی هوں اور اپنے یہودی ھونے پر فخر کرتا ہوں جبکه تم اب مسلمان کہلاتے ھوئے شرماتے ھو۔۔۔ جبکہ آج دنیا میں هماری حکومت هے۔
تم نے دیکها که هم نے تمهارے ساتھ کیا کیا؟
هم تمهاری سڑکوں په پهرے تو همیں تمهارا حال پسند نہیں آیا۔
تو پته هے هم نے کیا کیا؟
بہت آسانی سے تمهاری لڑکیوں کے سروں سے حجاب اتروادیا۔
دوسرے طریقوں سے قرآن بهی بهلوادیا
 تم لوگوں کے پاس اپنا لباس بهیجا اپنے بازاروں کو دیکهو سارے عریاں لباس کی نمائش گاه هیں،، اور تمہاری تہذیب کا لباس تمہارے بازاروں میں ڈھونڈے نہیں ملتا۔
اور مزے کی بات یہ هے کہ تم نے سب قبول کرلیا۔
 کیا تم کو نہیں معلوم که یہی حال قوم لوط کا تها۔
کتنے بےوقوف هو تم، که کہتے رهتے هو 
یہودیوں نے هماری زمین چهین لی، قرآن اور سنت کو ختم کروادیا۔
تم کہاں مر گئے هو۔۔؟کچھ کیوں نہیں کرتے؟
سڑکوں پر تمہاری لڑکیاں ایسے لباس میں گهوم رهی هیں کہ نام کا لباس ھے پہلے ہم نے تمھاری عورتوں کا حجاب اتارا پھر چادریں پھر ڈوپٹہ پھر لباس چست کیا شلواریں أنچی کیں اب شلوار کی جگہ ٹائیٹس پہنادیں ہم نے انھیں بازاروں راستوں میں برہینہ کردیا اب وہ ہمارا بنایا ھوا لباس فخر سے پہنتی ہیں اور تمھارا لباس پہنتے ھوۓ انھیں شرم آتی ھے ، کیا مضحکه خیز بات هے۔
 تمہارا حال بہت برا هوگیا،
همیں تم لوگوں کی تعلیم میں ترقی پسند نه آئی تو هم نے تمہارا نصاب بدلوادیا۔
اور تمہارے ٹیلی ویژن کو ذلت آمیز پروگراموں اور شرم ناک ڈراموں میں بدل دیا۔
تمہیں اور تمھارے علماء کو کچھ بولنے کی ضرورت نہیں، تمہارا چپ رهنا هی بہتر هے۔
هم نے تمہارے نوجوانوں کو بهٹکا دیا،
ایک دور تها که تم ایک پاکیزہ اور غالب امت تهے، آج تم ذلت کی پستیوں میں اترگئے هو،بےچارے۔
 هم نے محسوس کیا که تم لوگوں کی زبان عربی بہت خوب صورت هے جس سے تم قرآن پڑهتے هو، اور اهل جنت کی بهی یہی زبان هوگی، تو هم نے تمہاری زبان کو بے فائدہ اور فضول قراردیا، اور تم لوگوں نے فورا"یقین کرلیا، پهر تم دوسری زبانوں پر فخر کرنے لگے
(ہائے،، بائے،، هیلو،، مرسی، برستیج، وغیرہ وغیرہ)
اور تم نے اپنے دعائیه خوب صورت کلمات(السلام عليكم) کو چهوڑ کر انهی کا استعمال شروع کردیا اور هم تمہیں اسی طرح پسند کرتے هیں۔
 اور همیں یه بهی پسند نہیں آیا که تم لوگوں کو متحد دیکهیں، تو هم نےتمہاری مسجدوں کو اڑادیا اور الزام بهی تم پر هی لگایا۔
اس سے تمہارے درمیان باهمی لڑائیاں شروع هو گئیں۔
 هم نے تمہارے دین کا گہرائى سے مطالعہ کیا اور جهوٹے فتووں کے ذریعے تمہیں تمہاری راه سے هٹا دیا۔
هم نے تمہارے درمیان نفرت اور فساد کی آگ بهڑکائى جو تب تک نہیں بجهے گی جب تک که تم سب کو جلا کر راکھ نہ کردے تمہارے گهر والے اب جدید مشینی ایجادات کے زیر سایہ پرورش پاتے ہیں۔
 هم نے طرح طرح کی کمپیوٹر گیمز ایجاد کیں، جن میں کهو کر تم قرآن کو بهول گئے،اپنے علماء کو بهول گئے، مسلمان سائنس دانوں اور ان کے کارناموں کو بهول گئے، تمہاری نئى نسل ایسی نسل هے جو حق بات کہتے هوئے ڈرتی هے۔
ھم یہودی قوم، اس بات پر فخر کرتے ہیں  که تعداد میں اس قدر تهوڑے ھونے کے باوجود ھم نے تمہیں بہت آسانی سے گوشت کے ٹکڑوں کی مانند خرید لیا اور تمہیں اس کا کوئی ملال نہیں، تم خوش اور مست ہو،
نوٹ: جہاں تک ممکن ھو مسلمانوں کی بڑی تعداد کو بهیجیں .....
تلخ سہی لیکن ھے حقیقت

متعلقہ خبریں