ایک صحت مند آدمی اور ذیا بیطس کے مریض کے پیشاب میں کیا فرق ہوتاہے؟

2018 ,نومبر 30



نیویارک(مانیٹرنگ رپورٹ) ایک صحت مند آدمی اور ذیابیطس کے مریض کے پیشاب میں کیا فرق ہوتا ہے؟ اس کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ امریکہ میں ایک محقق نے ذیابیطس کے مریضوں کے پیشاب سے شراب بنا ڈالی ہے۔ ویب سائٹ wired.co.uk کے مطابق جیمز گلپن نامی اس محقق کو کچھ عرصہ قبل خود پہلی قسم کی ذیابیطس لاحق ہو گئی۔ جس پر اسے ذیابیطس کے مریضوں کے شوگر سے بھرپور ہوتا ہے۔ اس کے لیے اس نے کچھ شوگر کے عمر رسیدہ افراد کی خدمات حاصل کیں جن میں خود اس کی اپنی دادی بھی شامل تھی۔ جیمز نے ان افراد سے حاصل کردہ پیشاب کو پہلے پانی صاف کرنے کے طریقے سے ہی صاف کیا اور اس میں سے کیمیکلز اور شوگر کے مالیکیولز ختم کیے اور پھر کشید کرکے اس سے شراب حاصل کر لی۔

جیمز نے پیشاب سے کشید کی گئی اس شراب میں رنگ، ذائقہ اور اجزاءشامل کرکے بوتلوں میں بند کر دیا اور ہر بوتل پر اس شخص کا نام اور عمر درج کر دی جس کے پیشاب سے وہ بنی تھی۔ اس حوالے سے جیمز کا کہنا تھا کہ ”شوگر کے مریض افراد کے پیشاب سے شراب تیار کرنے کا مقصد لوگوں کو شوگر کے مریضوں اور صحت مند لوگوں کے پیشاب میں فرق بتانا ہے۔اگرچہ اس شراب کو بڑے پیمانے پر تیار نہیں کیا جا سکتا اور نہ ہی روایتی شراب کی طرح اس کی مارکیٹنگ کی جا سکتی ہے تاہم میں اسے چند ہفتے بعدمانچسٹر میں ہونے والے ایک فیسٹیول میں پیش کروں گا جہاں لوگوں کو یہ چکھنے کے لیے بھی دی جائے گی۔ میں نے 3فلمیں بھی بنائی ہیں جن میں شوگر کے متعلق آگہی دی گئی ہے۔ یہ فلمیں بھی اس فیسٹیول میں دکھائی جائیں گی۔“

    متعلقہ خبریں