دنیا میں سائنسدانوں کا انکشاف اور خوشی کی لہر

2016 ,دسمبر 9



واشنگٹن (شفق ڈیسک) سائنسدانوں اور ماہرین کی تحقیق کے میدان میں نت نئی اور انوکھی ایجادات نے انسانی زندگی کیلئے کئی آسانیاں پیدا کردی ہیں۔ حال ہی میں امریکا کے سائنسدان ایسا مصنوعی خون بنانے میں کامیاب ہو گئے ہیں جو پاؤڈر کی شکل میں بھی محفوظ کیا جا سکے گا جبکہ یہ خون ایمرجنسی کی صورت میں انسانی جان بچانے کیلئے پھیپھڑوں سے خلیے کو آکسیجن مہیا کرنے میں مدد گار ثابت ہوگا۔ واشنگٹن یونیورسٹی سکول آف میڈیسن کے ڈاکٹر ایلن کیمطابق انکی ٹیم انسانی ہیمو گلوبن پروٹین کے نچوڑ سے مصنوعی خون بنانے میں کامیاب ہو گئی ہے، یہ مصنوعی ریڈ بلڈ سیلز ہیں جو پھیپھڑوں سے جسم بھر میں خلیوں کو آکسیجن فراہم کر سکیں گے۔ ڈاکٹر ایلن کیمطابق مصنوعی سرخ خلیے پاؤڈر کی شکل میں محفوظ کئے جا سکتے ہیں اور ضرورت کے وقت اسکو اسٹرائل پانی میں حل کر کے جسم کو لگایا جا سکے گا۔ واضح رہے اس خون کو باقاعدہ ٹیسٹ کرنیکے بعد انسانوں کیلئے استعمال میں لانے میں 10 سال سے زائد کا عرصہ لگے گا۔

متعلقہ خبریں