ڈونلڈ ٹرمپ کی طرف سے حیرت انگیز انکشافات اور نائن الیون کی تحقیقات کا دوبارہ حکم

2016 ,نومبر 13



واشنگٹن (شفق ڈیسک) امریکی نو منتخب صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے نائن الیوان حملوں کی دوبارہ تحقیقات کرانے کا اعلان کر دیا ہے۔ امریکی میڈیا رپورٹس کیمطابق ڈونلڈ ٹرمپ نے امریکی ریاست ورجینیا کی ہینریکوکاؤنٹی میں ایک ریلی سے خطاب کرتے ہوئے اپنے ووٹرز سے وعدہ کیا تھا کہ وہ نائن الیون کی دہشتگردی کے واقعہ کی تحقیقات سے مطمئن نہیں ہیں اگر وہ اقتدار میں آگئے تو دوبارہ اس واقعے کی تحقیقات کرائینگے۔ اب امریکی نومنتخب صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے واضح الفاظ میں کہا کہ اس واقعہ کی دوبارہ نئے سرے سے تحقیقات کرائیں گے۔ ڈونلڈ ٹرمپ کے اس بیان نے امریکی سٹیبلشمنٹ کو ایک نئے امتحان سے دوچار کر دیا ہے۔ ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ ’’دو ہوائی جہاز اتنی بڑی آسمان کو چھوتی مضبوط عمارتوں کو کیسے تباہ کر کے گرا سکتے ہیں؟‘‘ ان کا کہنا تھا کہ یہ بات میری سمجھ سے بالاتر ہے کہ نائن الیون کی 585 صفحات پر مبنی تحقیقاتی رپورٹ میں ایک بلڈنگ نمبر 7 کی تباہی کا ذکر ہی نہیں ہے‘‘۔ امریکی نو منتخب صدر اس بات پر بھی انگلی اٹھا رہے ہیں کہ تحقیقات میں 19 ہائی جیکروں کا تعلق سعودی عرب سے ثابت ہوا لیکن امریکہ نے اس بارے میں کوئی ایکشن نہیں لیا۔ ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ امریکی عوام جواب مانگتے ہیں کہ ہمیں محفوظ رکھا نہیں گیا یا رکھنا نہیں چاہتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ اس دہشتگردی کے واقعہ کی تحقیقات اس لئے بھی ضروری ہیں تاکہ امریکہ کو مکمل طور پر محفوظ کیا جا سکے جس کیلئے میں اس دہشتگردی کے بڑے واقعہ کی دوبارہ تحقیقات کراؤنگا۔

متعلقہ خبریں