نواز شریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے میں تاخیر کیوں؟۔۔۔ تفصیلات جانئے اس خبر میں

2019 ,نومبر 9



لاہور (مانیٹرنگ رپورٹ) حکومت اور نیب دونوں نوازشریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کی ذمہ داری لینے کو تیار نہیں ہیں اور حکومت نے نوازشریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کی بجائے نیب کو ریفر کردیا۔ جبکہ نیب نے  نوازشریف کی سرکاری میڈیکل بورڈ اور شریف میڈیکل سٹی کی رپورٹس طلب کرلیں۔
واضح رہے گزشتہ روز شہبازشریف نے سابق وزیر اعظم نواز شریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کیلئے وزارت داخلہ کو درخواست دی تھی، دوسری جانب نواز شریف کو علاج کیلئے بیرون ملک لے جانے کی تمام تیاریاں مکمل کر لی گئیں ہیں اور ای سی ایل سے نام نکالنے کیلئے ضابطے کی کارروائی مکمل ہونے پر نواز شریف لندن روانہ ہو جائیں گے۔

نواز شریف کی تشویشناک صورتحال کے پیش نظر ائیر ایمبولینس کے ذریعے لیجانے کے آپشن پر بھی غور کیا گیا اور اس حوالے سے قطر سے ائیر ایمبولینس منگوانے کیلئے بات چیت بھی کی گئی ہے۔ رپورٹ کیمطابق نواز شریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان اور شریف میڈیکل کمپلیکس کے ڈاکٹروں پر مشتمل میڈیکل بورڈ نے گزشتہ روز بھی سابق وزیر اعظم محمد نواز شریف کا تفصیلی طبی معائنہ کیا۔ ذرائع کے مطابق نواز شریف کے پلیٹ لیٹس کی تعداد میں اچانک کمی ہوئی ہے اور یہ تعداد18ہزار کی سطح پر آگئی ہے۔ ڈاکٹروں نے شہباز شریف اور مریم نواز سے گزشتہ روزبھی تفصیلی مشاورت کی اور نواز شریف کی صحت کے پیش نظر کمرشل ،چارٹرڈ فلائٹ اور ائیر ایمبولینس کے آپشنز پر غور کیا گیا، ائیر ایمبولینس کے استعمال کی صورت میں قطر میں ائیر ایمبولینس کے حصول کے لئے بات چیت کر لی گئی ہے اورحتمی طو رپر طے ہونے کی صورت میں ائیر ایمبولینس فوری پاکستان پہنچ جائے گی۔ 
شریف خاندان نے نواز شریف کو لندن لے جانے کیلئے اپنی طرف سے تمام تیاریاں مکمل کرلی ہیں اورصرف ای سی ایل سے نام نکلنے کیلئے ضابطہ کی کارروائی مکمل ہونے کا انتظار کیا جارہا ہے۔

متعلقہ خبریں