بیٹے بیٹیوں سمیت علم لے کر نکلنے کا اعلان

تحریر: فضل حسین اعوان

| شائع مارچ 27, 2017 | 05:00 صبح

 

اسلام آباد، لاہور(مانیٹرنگ)پاکستان پیپلز پارٹی پارلیمنٹرینز کے سربراہ و سابق صدر مملکت آصف علی زرداری نے آئندہ عام انتخابات کو شفاف بنانے کیلئے تمام جماعتوں سے رابطے کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ گزشتہ انتخابات میں ہمارے ہاتھ بندھے ہوئے تھے لیکن اب ہمارے ہاتھ کھلے ہیں، پیپلز پارٹی نے پنجاب میں کبھی شکست نہیں کھائی ہاں البتہ ہم نے آر اوز الیکشن سے ضرور شکست کھائی ہے۔ یہ باتیں انہوں نے پیپلز پارٹی کے رہنما حاجی عزیز الرحمن چن کی طر ف سے اپنے اعزاز میں دئیے گئے استقبالیہ تق

ریب سے خطاب کرتے ہوئے کہیں۔ آصف علی زرداری کا مزید کہنا تھا کہ میں خود میدان میں ہوں، بلاول میدان میں ہے، میری بیٹیاں میدان میں ہیں، ہم مقابلہ کریں گے اور ان کو لگ پتہ جائیگا کہ الیکشن کس کو کہتے ہیں۔ آر اوز الیکشن پہلے بھی ہوتے رہے اور اب بھی ہو رہے ہیں۔ ہم نے یہ دیکھنا ہے کہ کس طرح پاکستان خاص طور پر لاہور اور پنجاب میں صاف اور شفاف الیکشن ہوں، اس سلسلہ میں تمام جماعتوں کے پاس وفود بھیجیں گے۔ انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی نے قربانیاں دی ہیں، یہاں شہیدوں کی بہنیں بیٹھی ہیں۔ مجھے یاد ہے جب بینظیر بھٹو لاہور آتی تھیں اور میں بھی ان کے ساتھ ہوتا تھا تو پورا لاہور بند ہو جاتا تھا انشاء اللہ اب بھی ہمارے آنے سے لاہور بند ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ آپ کا پرانا نعرہ ہے کہ بھٹو دے نعرے وجن گے لیکن اب ساتھ ملا لیں بھٹو دے نعرے وجن گے پیٹو سارے نچن گے، بھجن گے۔ ایک زرداری سب پہ بھاری نہیں بلکہ ایک زرداری سب سے یاری کا نعرہ لگائیں۔ انہوں نے کہاکہ آپ لوگوں کا ولولہ اور جوش دیکھ کر کہہ سکتا ہوں کہ آپ مقابلے کیلئے تیار ہیں۔ گزشتہ عام انتخابات میں ہمارے ہاتھ بندھے ہوئے تھے لیکن اب ہمارے ہاتھ کھلے ہیں۔علاوہ ازیں لاہور چیمبر آف کامرس کے وفد سے ملاقات کے دوران سابق صدر آصف زرداری نے کہا ہے کہ بیرونی قرضوں کی شرح خطرناک حد کو چھو رہی ہے۔ غیر ملکی قرضے بلند ترین شرح سود پر لئے جارہے ہیں، حکومت کی ناقص پالیسیوں کا خمیازہ کسان اور تاجر بھگت رہے ہیں، تیل کی قیمتوں میں کمی کے ثمرات عوام تک منتقل نہیں ہوئے۔ پی پی دوبارہ حکومت میں آکر تاجروں کیلئے سرمایہ کاری کے دروازے کھولے گی۔ ہم پنجاب میں نکلے ہیں اب انہیں بتائیں گے کہ الیکشن کیسے لڑا جاتا ہے۔ پہلے بھی ہم نے پنجاب میں شکست نہیں کھائی ہمیں آر او ایکشن سے ہرایا گیا۔ پنجاب میں کس طرح شفاف الیکشن ہوتے ہیں ہم بتائیں گے۔ ملتان میں جلسہ کریں گے اور انہیں بتائیں گے کہ جلسہ کسے کہتے ہیں۔ دریں اثناء لاہور سے جاری ایک بیان میں آصف علی زرداری کا کہنا ہے کہ پاکستان اور افغانستان کا باہمی رضا مندی سے سرحد پر باڑ لگانے کا فیصلہ سنجیدہ اقدام ہے، اس سے دہشت گردی اور عسکریت پسندی کے خاتمے اور قیام امن میں مدد ملے گی، اب یہ فیصلہ کسی طور تاخیر کی نذر نہیں ہونا چاہئے۔ سابق صدر نے پاک افغان سرحد پر باڑ لگانے کے فیصلے کو اہم قرار دیا اور کہا کہ بدقسمتی سے حالیہ دنوں میں دونوں ممالک کے درمیان تعلقات نازک موڑ پر پہنچ گئے ہیں۔ آصف زرداری کا کہنا تھا کہ باہمی رضامندی سے کی جانے والی بارڈر مینجمنٹ میں پہلے ہی بہت دیر ہوچکی ہے، امید ہے باڑ لگانے کے فیصلے کو خوش آمدید کہا جائے گا اور وہ تمام قوتیں جو دہشت گردی اور بے جا الزام تراشی کا خاتمہ چاہتی ہیں وہ اس فیصلے کا خیرمقدم کریں گی۔ انہوں نے کہا کہ عدم اعتماد اور شکوک و شبہات کے خاتمے کے لئے مخلصانہ کوششیں کرنا ہوں گی۔ دریں اثناء آصف علی زرداری گزشتہ روز کاظم خان مرحوم کے اہل خانہ سے تعزیت کرنے کیلئے ان کے گھر بھی گئے۔ مزید برآں آصف زرداری نے لاہور میں پارٹی رہنمائوں کا اجلاس (آج) پیر کو بلاول ہائوس میں 11 بجے طلب کرلیا ہے جہاں پر آئندہ انتخابات کیلئے رہنمائوں کے چنائو کا فیصلہ کیا جائیگا۔ اس کے علاوہ بلاول بھٹو زرداری نے بھی اسلام آباد میں پارٹی رہنمائوں کا آج اجلاس طلب کیا ہے جس میں آئندہ عام انتخابات کے حوالے سے اہم فیصلے کئے جائیں گے۔