ایک لڑکی اور تیس مرد

2016 ,دسمبر 16



برازیلیا (شفق ڈیسک) اجتماعی جنسی درندگی نے برازیل کو لرزا کر رکھ دیا جبکہ پولیس نے ریوڈی جنیرو میں جواں سالہ لڑکی سے زیادتی کرنے والے 30 مشتبہ ملزمان کی تلاش شروع کر دی۔ کہا جا رہا ہے کہ اپنے بوائے فرینڈ کے گھر جانے کے بعد 16سالہ لڑکی کونشہ آواز چیز دی گئی جبکہ لڑکی کا کہنا تھا کہ جب اسے ہوش آیا تو وہ ایک اور گھر میں تھی جہاں مردوں نے اسے گھیرے میں لے رکھا تھا متاثرہ لڑکی کے بوائے فرینڈ سمیت ملزمان کے وارنٹ گرفتاری جاری ہو چکے ہیں جبکہ عصمت دری کے اس واقعے کے بعد سوشل میڈیا پر ایک مہم چل پڑی ہے۔ اس واقعے کی متضاد تفصیلات موصول ہو رہی ہیں اور ریپ کا یہ واقعہ ریوڈی جنیرو کے جنوبی علاقے میں پیش آیا۔ پولیس کو دیئے گئے بیان میں متاثرہ لڑکی نے بتایا کہ ہفتے کو دوست کے گھر جانے کے بعد اتوار کو اسکی آنکھ کھلی، وہ برہنہ اور خون میں لت پت تھی جس کے بعد اپنے گھر آگئی۔ اس واقعے کے چند دنوں بعد مبینہ جنسی درندوں نے اس واقعے کی تصاویر ٹوئیٹر پر شیئر کر دیں اس پر عورتوں کیخلاف نفرت آمیز تبصروں کا سلسلہ شروع ہو گیا تاہم بعد ازاں کچھ اکانٹس معطل کر دیئے گئے۔ متاثرہ لڑکی کی نانی نے مقامی میڈیا کو بتایا کہ فیملی نے دیکھنے کے بعد چلانا شروع کر دیا جب ہمیں پتہ چلا تو یقین نہیں آ رہا تھا لیکن بہت افسوس ہوا، مصیبت میں یہ مایوس کن صورتحال ہے۔ متاثرہ لڑکی کی حالت بھی ٹھیک نہیں، وہ بہت زیادہ کنفیوز اور معاملہ سنجیدہ ہے اس حملے نے پورے برازیل کو ہلا کر رکھ دیا ہے جبکہ آئندہ دنوں میں مزید احتجاج کے اعلانات بھی کر دیئے گئے ہیں جبکہ سوشل میڈیا پر شدید غم وغصہ کا اظہار کیا جا رہا ہے۔

متعلقہ خبریں